پیر, فروری 19, 2024
ہومتازہ ترینایچ ای سی، برٹش کونسل اور پی ایم وائی پی کیمابین معاہدہ...

ایچ ای سی، برٹش کونسل اور پی ایم وائی پی کیمابین معاہدہ طے،ایل او آئی پر دستخط

لاہور: ہائرایجوکیشن کمیشن پاکستان (ایچ ای سی)، برٹش کونسل اور پرائم منسٹر یوتھ پروگرام نے اپنے فلیگ شپ پروگراموں میں تعاون کے لیے ایک نئی شراکت داری کا اجراء کردیا جس کا مقصد پاکستانی نوجوانوں کی معاشی اور سماجی ترقی میں حصہ ڈالنا ہے۔

وزیراعظم پاکستان کے معاون خصوصی برائے یوتھ پروگرام سید وصی شاہ دستخط کی تقریب کے مہمان خصوصی شرکت کی.تقریب میں چیئرمین ایچ ای سی پاکستان پروفیسرڈاکٹرمختاراحمد، ایگزیکٹیو ڈائریکٹر ایچ ای سی پروفیسرڈاکٹر ضیاءالقیوم،کنٹری ڈائریکٹر برٹش کونسل جیمز تھامسن اور دیگر اعلی افسران ڈپٹی سیکرٹری پرائم منسٹر یوتھ پروگرام ڈاکٹر محمد علی ملک، ایڈوائزر (گلوبل انگیجمنٹ) ایچ ای سی اویس احمد اور کنٹری ڈائریکٹر برٹش کونسل ہیمپسن نے ایل او آئی پر دستخط کئے۔

سہ فریقی تعاون پرائم منسٹر یوتھ پروگرام ( Prime Minister’s Youth Programme )کے گرین یوتھ موومنٹ ، ایچ ای سی کی گرین یوتھ موومنٹ اور برٹش کونسل کا پاکستان یوتھ لیڈر شپ انیشیٹو کے نتائج پر مرکوزہو گا۔ مشترکہ تعاون کے بنیادی مقاصد گرین یوتھ موومنٹ کلبوں کو ضروری صلاحیت سازی اور تکنیکی مدد فراہم کرنا، تربیتی مواد تیار کرنا، گرین یوتھ موومنٹ کلبوں اور دیگر ترقیاتی شراکت داروں کے درمیان قومی اور بین الاقوامی دونوں محاذوں پر روابط قائم کرنا ہے تاکہ نوجوانوں کے اقدامات کے اثرات کو بڑھایا جا سکے۔ .

مزید برآں، اس میں کلبوں، فوکل پرسنز اور فیکلٹی ممبران کے لیے تربیتی سیشنز کے انعقاد کا احاطہ کیا جائے گا، جو انہیں لیڈر شپ ٹریننگ کو مؤثر طریقے سے سہولت فراہم کرنے کے لیے ضروری مہارتوں سے بااختیار بنائے گا۔ اس تعاون میں ڈیجیٹل پلیٹ فارم کی ترقی اور نگرانی اور تشخیص کے فریم ورک کو شامل کیا جائے گا۔

معاون خصوصی برائے وزیراعظم پاکستان وصی شاہ نےاپنے خطاب میں اس بات پر زور دیا کہ موسمیاتی تبدیلی کی آفات کے حوالے سے قوم میں احساس ذمہ داری کی ضرورت ہے۔موسمیاتی تبدیلیوں کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے پاکستانی نوجوانوں کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کی ضرورت ہے اوریہ ملک کا اثاثہ ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ "گرین یوتھ موومنٹ پراجیکٹ کے تحت، ہم نے پاکستان بھر کی 137 یونیورسٹیوں میں گرین یوتھ موومنٹ کلب قائم کیے ہیں۔ یہ کلب پانچ موضوعاتی شعبوں میں کام کر رہے ہیں جو کہ زراعت اور جنگلات، قابل تجدید توانائی، مائع اور سالڈ ویسٹ مینجمنٹ، پانی کی بچت اور ماحولیاتی سیاحت ہیں۔

چیئرمین ایچ ای سی ڈاکٹر مختار احمد ( Dr Mukhtar Ahmed ) نے اپنے خطاب میں کہا کہ یہ مشترکہ کوشش پاکستان میں نوجوانوں کی معاشی اور سماجی ترقی کے عزم کی نشاندہی کرتی ہے، جس میں موسمیاتی کارروائی، اختراعات اور قیادت پر توجہ دی گئی ہے۔” انہوں نے کہا کہ مشترکہ پروگراموں اور اقدامات کے ذریعے سہ فریقی شراکت داری کا مقصد ملک میں نوجوانوں کے منظر نامے پر دیرپا اثر پیدا کرنا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تینوں شراکت دار پاکستانی نوجوانوں کی آب و ہوا کے چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت پیدا کرنے کے لیے مل کر کام کریں گے اور ان چیلنجوں پر قابو پانے کے لیے بامعنی کردار ادا کریں گے۔

کنٹری ڈائریکٹربرٹش کونسل پاکستان ( British Council Pakistan )نے کہا کہ پی ایم وائی پی، ایچ ای سی اور برٹش کونسل کے درمیان شراکت داری نوجوانوں کو آج کے موسمیاتی بحران کا سامنا کرتے ہوئے اپنے مستقبل کو کل کے لیڈر بنانے میں مدد دے گی۔پی ایم وائی پی، ایچ ای سی اور برٹش کونسل کے درمیان شراکت داری نوجوانوں کو آج کے موسمیاتی بحران کا سامنا کرتے ہوئے اپنے مستقبل کو کل کے لیڈر بنانے میں مدد دے گی۔ انہوں نے کہا کہ ایچ ای سی اور برٹش کونسل طویل عرصے سے شراکت دار ہیں، کیونکہ دونوں اداروں نے 22 سے زائد منصوبوں پر مشترکہ طور پر کام کیا ہے۔ ملک میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ کے لیے ایچ ای سی کے عزم کو سراہتے ہوئے، انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاک-یو کے ایجوکیشن گیٹ وے جیسے پروگرام حکومتوں اور لوگوں کو قریب لاتے ہوئے شاندار نتائج برآمد کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کو اس حقیقت کا ادراک ہے کہ پاکستان موسمیاتی تبدیلیوں کے سب سے بڑے متاثرین میں سے ایک ہے۔ انہوں نے کہا کہ "شراکت داری نوجوانوں کو آج کے موسمیاتی بحران کا سامنا کرتے ہوئے کل کے رہنما کے طور پر اپنے مستقبل کی تشکیل میں مدد دے گی۔

ایگزیکٹو ڈائریکٹر ایچ ای سی نے بھی اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کیا اور ایسے اہم اقدام میں ایچ ای سی کے ساتھ تعاون کرنے پر شراکت داروں کا شکریہ ادا کیا۔

متعلقہ خبریں

مقبول ترین

متعلقہ خبریں