SHO کی بیٹی کو معمولی سزا ملنے پر استانی کو جیل بند کرادیا گیا .

بلاگ : قمر نقیب خان

ثمرین ندیم سکول میں پڑھاتی ہیں . وہ ایک اچھی ٹیچر ہیں اور ضلع میں بہترین ٹیچر کا ایوارڈ بھی حاصل کر چکی ہیں ، بارہ اکتوبر کو انہوں نے ایک بچی کو بطور سزا ہاتھ پر دو چھڑیاں ماریں ، لیکن وہ نہیں جانتی تھیں کہ یہ بچی اقبال مارکیٹ تھانے کے ایس ایچ او کی بیٹی ہے .

ایس ایچ او صاحب نے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرتے ہوئے پندرہ دن بعد وومن تھانے میں ایف آئی آر درج کی اور رات تین بجے ثمرین کے گھر پر چھاپہ مار کر انہیں گرفتار کیا ، کسی دہشت گرد کی طرح ان کے سر پر کالا کپڑا باندھا اور رات حوالات میں بند کر دیا.

ایس ایچ او کی جانب سے خاتون ٹیچر کے خلاف درج کرائی گئی ایف آئی آر کا عکس

روز پیٹل سکول، منصور نگر اورنگی ٹاؤن ساڑھے گیارہ نمبر کے اساتذہ اور دیگر بچوں کے والدین نے لیاقت آباد تھانے کے سامنے احتجاج کیا، پولیس گردی کے خلاف نعرے لگائے اور ٹیچر ثمرین کی رہائی کا مطالبہ کیا.

اساتذہ ، بچے اور والدین جتنا مرضی احتجاج کرتے رہیں، ایف آئی آر درج ہو چکی، ثمرین کے اگلے دو سال تھانے کچہری اور عدالتوں کے چکر کاٹتے ہی گزریں گے ، جب تک ثمرین ایس ایچ او صاحب ان کی بیوی اور بیٹی سے معافی نہ مانگ لے .

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *