واٹر بورڈ کے 206 افسران کی ترقیوں کی تیاری کرلی گئی ،

رپورٹ : اختر شیخ

کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ ( کے ڈبلیو اینڈ ایس بی ) کے 206 افسران و انجینئرز کی ترقیوں کے فیصلے کے لیے 3 جنوری 2020 کو ڈپارٹمینٹل پروموشن کمیٹی ( ڈی پی سی ) نمبر ایک کا اجلاس طلب کرلیا گیا ہے ۔ سرکاری ذرائع کے مطابق اس اجلاس میں گریڈ 19 کے 3 انجینئرز اور 2 نان انجینئرز کے افسران کی ترقی کا فیصلہ کیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ واٹر بورڈ میں اعلی انجینئرز اور افسران کی ترقیوں کا معاملہ گزشتہ 3 سال سے التوا میں تھا ۔ جس کی وجوہات سینیارٹی لسٹ کا حتمی نہ ہونا اور حکومت کی جانب سے ترقیون کے لیے اجلاس نہ بلانا تھا ۔ مذکورہ اجلاس میں گریڈ 16 سے 17 ، 17 سے 18 ، 18 سے 19 اور 19 سے 20 گریڈ کے مجموعی طور پر 204 افسران و انجینئرز کو ترقیاں دینے کا حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔

سب سے زیادہ ترقیاں گریڈ 16 تا 17 کے افسران و انجینئرز کی ہوںگی ۔ گریڈ 19 کے جن انجینئرز کی سنیارٹی اور کارکردگی کی بنیاد پر ترقیوں کا امکان ہے ، جن میں انجینئر حسن اعجاز کاظمی ، انجینئر امتیاز الدین اور انجینئر ظفر پلیجو شامل ہیں ۔

واٹر بورڈ کے ذرائع کے مطابق انجینئر ظفر پلیجو کی سنیارٹی کے حوالے سے بھی تاحال ہائی کورٹ کے فیصلے کی کاپی نہیں مل سکی لہٰذا اس بار بھی ان کی ترقی کا فیصلہ التوا میں پڑ سکتا ہے تاہم ڈی پی سی دیگر سینئرز انجینئرز کو ترقی دینے کا فیصلہ کر سکتی ہے۔ جبکہ نان انجینئرز افسران میں ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹرز ریونیو اینڈ ریکوری اور ڈپٹی منیجنگ ڈائریکٹر ایچ آر ایم کی اسامیوں کے لیے سینئرز افسران کی ترقیاں کی جائیں گی۔

تاہم ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ گریڈ 20 کی اسامیوں پر سینئر افسران کی سنیارٹی لسٹ کو حتمی شکل نہیں دی جاسکی اس لیے ان گریڈز پر ترقیوں کا فیصلہ نہیں ہوسکے گا ۔ ڈی ایم ڈی آر آر جی اور ڈی ایم ڈی ایچ آر ایم کی گریڈ 20 کی اسامیوں پر ترقیاں حاصل کرنے کے امیدواروں میں اسامیوں موجودہ قائم مقام ڈی ایم ڈی ریونیو اینڈ ریکوری محمد ثاقب اور ڈی ایم ڈی ، ایچ آر ایم شعیب تغلق بھی ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈپارٹمنٹل پروموشن کمیٹی کا اجلاس ایم ڈی انجینئر اسد اللہ خان کی صدارت میں 3 جنوری کو ہوگا ۔ اس اجلاس میں مبینہ طور پر گریڈ 17 سے 18 اور 16 سے 17 میں ترقی کے لیے 4 ڈپلومہ ہولڈرز کے نام بھی رکھے گئے ہیں حالانکہ سپریم کورٹ کے حکم کے تحت انہیں ایگزیکٹو انجینئر کی حیثیت سے ترقی نہیں دی جاسکتی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں