غیر قانونی ہائیڈرنٹس چلانے والوں کے خلاف گھیرا تنگ

ایم ڈی واٹربورڈ انجینئر اسد اللہ خان کی ہدایات پر واٹربورڈ کے ڈسکنکشن اسکواڈ کی گلشن اقبال میں کارروائی واٹربورڈ کے ہائیڈرنٹس کے پانی کے نام پر زیرزمین پانی کی فروخت کا نیٹ ورک پکڑا گیا ، تین بڑے اور گہرے کنویں مسمار پانی کی فروخت میں استعمال ہونے والا سامان بھی ضبط کرلیا گیا

تفصیلات کے مطابق ایم ڈی واٹربورڈ انجینئر اسد اللہ خان کی ہدایات پر اتوار کی صبح واٹربورڈ کے ڈسکنکشن اسکواڈ نے ڈائریکٹر انفورسمنٹ تابش رضا ایگزیکٹیوانجینئر گلشن اقبال آغا عباس اسسٹنٹ کمشنر احمد علی اور پولیس نفری کے ساتھ گلشن اقبال بلاک 4 عظیم گوٹھ میں واٹربورڈ کے ہائیڈرنٹس کے پانی کے نام پرٹینکروں کے ذریعے زیرزمین پانی فروخت کرنے والے نیٹ ورک پر اچانک چھاپہ مارا اور اس کا خاتمہ کردیا ،

واٹربورڈ کے عملے نے پانی کی غیرقانونی فروخت میں استعمال ہونے والا سامان قبضہ میں لے لیا ،ڈسکنکشن اسکواڈ اور پولیس کو آتا دیکھ کر ملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے ، ملزمان تین بڑے اور گہرے کنوؤں سے پانی نکال کر ٹینکروں کے ذریعے فروخت کرتے تھے ،ڈسکنکشن اسکوارڈ نے تینوں کنویں مسمار کردیئے ،واٹربورڈ متعلقہ تھانے میں ملزمان کیخلاف مقدمات درج کرارہا ہے ،

دریں اثناء ایم ڈی واٹربورڈ نے واٹربورڈ کے متعلقہ انجینئرز اور افسران کوپانی چوروں اور غیرقانونی ہائیڈرنٹس کیخلاف بھرپور کریک ڈاؤن کی ہدایات جاری کردی ہیں اس ضمن میں ضلعی انتظامیہ کو تعاون کیلئے خطوط بھی ارسال کردیئے گئے ہیں انہوں نے کہا کہ پانی چور اور غیرقانونی ہائیڈرنٹس کے ذریعے شہریوں کے حصے کا پانی چوری کرکے مہنگے داموں انہیں فروخت کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں ہیں پانی چور چاہے کتنے ہی بااثر کیوں نہ ہوں انہیں قانون کی گرفت میں لایا جائے گا اور ان کے خلاف پانی چوری کے سخت قوانین کے تحت مقدمات کا اندراج کرایا جائے گا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *