ہماری امن پسندی کو کمزوری سمجھنے والے اپناقبلہ درست کرلیں، علامہ اورنگزیب فاروقی

شہر قائد میں اہلسنّت ذمہ داران وکارکنان کی مسلسل ٹارگٹ کلنگ ،رہنماﺅں وکارکنان کولاپتہ کیے جانے ، قاتلوں کی عدم گرفتاری ،انہیں کھلی چھوٹ دیے جانے اوررہنماﺅں کو سکیورٹی فراہم نہ کیے جانے کیخلاف اہلسنّت والجماعت پاکستان نے کراچی پریس کلب پراحتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے اہلسنّت والجماعت کے مرکزی صدرعلامہ اورنگزیب فاروقی نے صدرکراچی علامہ رب نوازحنفی،علامہ تاج محمدحنفی،سنی علماءکونسل کے رہنماءسیدمحی الدین شاہ،مولاناعادل عمر، سنی ایکشن کمیٹی کے رہنماءشکیل فاروقی و دیگررہنماﺅں نے خطاب کرتے ہوئے کیا.

علامہ اورنگزیب فاروقی نے کہاکہ کراچی میں قانون نافذکرنے والے اداروں نے بڑی مشکلات اورقربانیوں کے بعدامن کاقیام ممکن بنایالیکن شہرقائدکے دشمنوں کویہاں کاامن راس نہیںآرہااوروہ اپنے بیرونی واندرونی آقاﺅں کے اشارے پرکراچی کاامن تباہ کرنے پرتلے ہوئے ہیں، ہمارے ذمہ داران اورکارکنان کی مسلسل ٹارگٹ کلنگ میں ایرانی نمک خوارملوث ہیں، اندرون وبیرون ملک تمام اداروںاورایجنسیزکومعلوم ہے کہ اہلسنّت والجماعت پاکستان ایک انتہائی پرامن اورقانون پسند جماعت ہے، ہماری امن پسندی کی گواہی ہرفرداورادارہ دیتاہے اس کے باوجودہمیں مسلسل ٹارگٹ کلنگ کانشانہ بنایاجارہاہے، حکومت سمیت تمام ادارے اہلسنّت کارکنان کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے تمام تر وسائل بروئے کارلائیں، ہمارے فریق مخالف کے علاقوں میں ٹارگٹڈآپریشن کیے جائیں، ہمارے قاتل وہاں چھپے ہوئے ہیں،ہمارے تمام اہم ذمہ داران کوفوری سکیورٹی فراہم کیے جائیں، ہم نے ہمیشہ لاشیں اٹھانے کے باوجودامن پسندی کاثبوت دیا،یہ شہراورملک ہماراہے اورہم یہاںلاءاینڈآرڈرکاکوئی مسئلہ پیدا کرنانہیں چاہتے،

ہمارامطالبہ ہے کہ فوری طورپراہلسنّت رہنماﺅں کوفول پروف سکیورٹی فراہم اورقاتلوں کوگرفتارکیے جائیں بصورت دیگرہم اپنے تحفظ کیلئے احتجاجی مظاہروں سمیت تمام قانونی راستے اپنانے پرمجبورہوجائیںگے اورہمیں کوئی بھی اپنے آئینی وقانونی حقوق کے حصول سے نہیں روک سکتا،ملک بھرمیں اہم مذہبی وقومی شخصیات کوفول پروف سکیورٹی فراہم کرنے کے احکامات جاری کردیے گئے ہیں .

علامہ رب نوازحنفی نے کہاں کہ کوئی مجھے بتائے اس وقت پاکستان میں سب سے زیادہ اگرکسی تنظیم کے ذمہ داران کی جانوں کوخطرہ ہے تووہ اہلسنّت والجماعت پاکستان ہے، ماضی میں بھی درجنوں کے حساب سے ہمارے مرکزی،صوبائی،ڈویژنل،علاقائی ذمہ داران کے ساتھ ساتھ ہزاروں کارکنان دہشت گردوں کے ہاتھوں موت کے گھاٹاتاردیے گئے،اس وقت مرکزی صدرعلامہ اورنگزیب فاروقی سمیت دیگرقائدین وذمہ داران سرکاری سکیورٹی سے محروم ہیں، وفاقی وزارت داخلہ سے ہمارامطالبہ ہے کہ علامہ اورنگزیب فاروقی سمیت اہلسنّت والجماعت کے قائدین وذمہ داران کوفوری فول پروف سکیورٹی فراہم کیے جائیں،بصورت دیگراگرقائدین کوکسی قسم کاکوئی نقصان پہنچاتواس کی ذمہ داری وزیراعلیٰ سندھ،گونرسندھ آئی جی سندھ سمیت وفاقی اورصوبائی حکومتوں پرعائدہوگی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *