سوشل سیکورٹی کا 65 فی صد بجٹ محنت کشوں کی طبی سہولتوں پر خرچ کیاجاتا ہے،

کمشنر سندھ سوشل سیکورٹی کاشف گلزار شیخ نے کہا ہے کہ طب کے پیشے سے وابستہ افراد ادارے کے لئے شو ونڈو کی حیثیت رکھتے ہیں جبکہ تربیت ترقی کے عمل کو تیز کرتی ہے۔ انہوں نے یہ بات سوشل سیکورٹی کے ڈاکٹرز کے لئے منعقدہ دو روزہ تربیتی کورس کے افتتاح کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں ادارے کے 15 ڈاکٹرز نے شرکت کی۔

انہوں نے کہاکہ سوشل سیکورٹی کا ادارہ بیماری، دوران کارچوٹ، معذوری اور دیگر مشکلات کی مدد کیلئے قائم کیا گیا ہے۔ سوشل سیکورٹی کے تحت فراہم کئے جانے والے فوائد میں سب سے اہم فائدہ طبی سہولتوں کی فراہمی ہے جس پر تقریباً کل بجٹ کا 65 فیصد خرچ کیا جاتا ہے۔ اپ کا براہ راست واسطہ محنت کش طبقہ سے ہوتا ہے جس کے سود مند نتائج اسی صورت میں سامنے آسکتے ہیں جب آپ اپنی ذمہ داریاں پوری تندہی، جانفشانی اور لگن سے انجام دیں۔

ڈاکٹرز کی تھوڑی سی توجہ ادارے کی نیک نامی کے ساتھ مریضوں کی دلجوئی اور انکے بہتر علاج کا سبب بن سکتی ہے۔ تربیتی کورس سے مینجمنٹ کنسلٹنٹ سلمان عارف حسین ،ڈاؤمیڈیکل یونیورسٹی، سول ہسپتال کے ای این ٹی انچارج پروفیسر ڈاکٹرعاطف حسین صدیقی ، ڈاکٹرشہناز شلوانی ، ولیکا ہسپتال کے آرتھوپیڈک سرجن ڈاکٹرغلام حسین ،شعبہ اطفال کے سربراہ ڈاکٹرامان اللہ میمن اورشعبہ امراض جلد کے ماہر ڈاکٹررضوان نے لیکچر دیئے۔

قبل ازیں شعبہ تعلقات عامہ تربیت و تحقیق کی ڈائریکٹرنشاط زیدی نے بتایا کہ یہ تربیتی پروگرام شعبہ تربیت و تحقیق کا 249واں پروگرام ہے جبکہ ڈاکٹروں کیلئے یہ 48واں پروگرام ہے۔ تربیتی سیشن کے آخری روز ادارے کے وائس کمشنر شاہد عبدالسلام نے شرکاء کو تربیتی کورس مکمل کرنے پر مبارکباد پیش کی اور شرکاء میں سرٹیفکیٹس تقسیم کئے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *