گیسٹ ہاوس اینڈ ہوٹلز ایسوسی ایشن کا جماعت اسلامی کے دھرنے میں بھر پور شرکت ،معاشی قتل بند کرنے کی اپیل

معاشتی قتل عام بے روزگاری اور دہشت گردی میں ہوشربااضافے کا باعث بنے گا،گیسٹ ہاؤس اور ہوٹلز کی بندش سے سیاحت کو ناقابل تلافی نقصان ہو گا ،ان خیالات کا ا ظہار گزشتہ روز کراچی پریس کلب پر جماعت اسلامی کے ہونے والے احتجاجی دھرنے میں مظاہرین نے کیا .

جماعت اسلامی کے تحت احتجاجی دھرنے میں جماعت اسلامی کراچی کے رہنما حافظ نعیم الرحمن ،ایم پی اے سید عبدالرشید ،تاجر تنظیموں کے رہنما اور گیسٹ ہاؤس اینڈ ہوٹلز ایسوسی ایشن کے رہنما بھی شریک ہوئے ،اس موقع پر گیسٹ ہاؤس کے مالکان اور ملازمین کی جانب سے پلے کارڈ اور بینزر بھی آویزاں کئے گئے تھے جن پر مختلف نعرے درج کئے گئے تھے ،پلے کارڈ پر ‘‘دہشت گردی پر قابوروزگار کی فراہمی سے ہی ممکن ہے ،معاشی قتل عام بند کرو،گیسٹ ہاؤس اور ہوٹلز کی بندش سے سیاحت کو ناقابل تلافی نقصان ہو گا لکھا گیا تھا .

اس موقع پر جماعت اسلامی کے ایم پی اے سید عبدالرشید نے گیسٹ ہاؤس ملازمین سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کہا کہ ہم کسی صورت کراچی میں امن کی بحالی اور روزگارکی فراہمی کرنے والوں کو ساتھ نہیں چھوڑی گے ۔جس معاشرے میں لوگوں کو بے روزگار کردیا جائے وہاں جرائم کی شرح بڑھ جاتی ہے .

گیسٹ ہاوس ایسویسی ایشن کے صدر طاہر خان اوریازئی ،جنرل سیکرٹری عرفان بشیر ،فنانس سیکرٹری یوسف لاکھانی اور میڈیاایڈوائزر ملک صفدر نے کہا کہ ہمارے اس شہر میں ایک ہزار سے زائد گیسٹ ہاؤس اور ا ن میں ایک ہزار سے زائد کمرے ہیں جہاں بیرون ممالک سے آنے والے سیاحوں ،انڈسٹرلٹ ، تاجروں اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کو سستے داموں رہائش فراہم کرتے ہیں ۔اس لئے ہمارے خلاف جاری پروپیگنڈا بند کیا جائے اور کیوں کہ ہم سالانہ اربوں روپے ٹیکس کی صورت میں ادائیگیاں کرتے ہیں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *