تربیلا غازی (رپورٹ : جاوید اقبال)

تربیلا 4 منصوبہ کے ڈرافٹ ٹیوب گیٹ سلٹ کیوجہ سے بلاک ھوگئے ۔گیٹ کھولنے کی تمام کوششیں ناکام ہو گئی ہیں جس کی وجہ سے روزانہ کروڑوں روپے کا نقصان ہورہا ہے ۔ گیٹ بلاک ھونیکی وجہ لو لیول پانی سے فرسٹ یونٹ کا افتتاح تھا ۔ سابق حکومت کے افتتاح کرنے کے دباؤ میں آکر سابق جنرل منیجر نے 10 مارچ کو فرسٹ یونٹ چلوا کر افتتاح کروا دیا ۔اُس وقت تربیلا ڈیم جھیل کا لیول ڈیڈ تھا جسکی وجہ سے سلٹ آکر تینوں یونٹس میں پھنس گئی اور آوٹر ڈدافٹ ٹیوب گیٹس بلاک ھوگئے جبکہ آؤٹر ڈرافٹ ٹیوب گیٹس کے سامنے بھی سلٹ کی بڑی مقدار جمع ہے جسکی وجہ یہ بتائی جا رہی ہے کہ اس ایریا میں بنایا جانیوالا کافر ڈیم کی دیوار کو بھی مکمل نہیں توڑا گیا اور ان دونوں وجوہات کی بنا پر silt یعنی مٹی اور ریت کی بہت بڑی مقدار نے ٹنل نمبر 4 میں پھنس کر تمام نیو تعمیر شدہ تین یونٹس 16 تا 18 کو مکمل چوک کردیا ہے اور گزشتہ 26 روز سے یہ صورتحال جاری ہے۔ آوٹر ڈرافٹ ٹیوبس کے تینوں گیٹس سلٹ میں پھنسے ہوئے ہیں اور اب تک گیٹوں کو کھولنے کی تمام کوششیں ناکام ہوچکی ہیں لوکل کنٹریکٹر نے غوطہ خوروں کی ایک ٹیم لائی وہ بھی نا کام ہو چکے ہیں اور T 4 پروجیکٹ کو بجلی کی پیداوار نہ ہونے سے کروڑوں روپے کا نقصان ہوچکا ہے واپڈا کنٹریکٹر اور کنسلٹنٹس اس بارے میں اپنی ابتدائی رپورٹس چیئر مین واپڈا کو دے چکے ہیں اور اس کی وجہ یہی بتائی جا رہی ہے ۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپنے سیاسی کریڈٹ کیلئے واپڈا پر دباؤ ڈال کر 10 مارچ کو پہلے یونٹ کا افتتاح کردیا تھا اور اس وقت تربیلا جھیل ڈیڈ لیول پر تھی اور سیاسی کریڈٹ کی خاطر ملک اور قوم کا بھاری نقصان کر دیا جو اربوں روپے میں ہے اس بارے میں جب واپڈا تربیلا T 4 منصوبہ کے پروجیکٹ ڈائریکٹر اور چیف انجئنیر عرفان میانہ سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے بتایا کہ اس بارے میں انکو واپڈا ہائی لیول اتھارٹی نے سختی سے حکم دیاہے کہ میڈیا کو کوئی موقف نہ دیا جائے لہذاہ میں معذرت کرتا ہوں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *