کلدیپ نیئر یا نائر ؟

مجھے سن درست یاد نہیں ہے غالبا ممبئی حملوں کے بعد اِن کا پہلا دورہ پاکستان تھا ۔کراچی پریس کلب کے ابراہیم جلیس ہال یا نجیب مرحوم ٹیرس( یاد نہیں) میں آنجہانی کلدیپ صاحب کے اعزاز میں تقریب رکھی گئی جہاں صحافیوں اور دانشوروں کی بڑی تعداد شریک تھی ۔

اسٹیج سیکریٹری نے کلدیپ صاحب کو دعوت سخن دیتے ہوئے ” کلدیپ نیئر ” کے نام سے انہیں یاد کیا جس کے بعد کلدیپ صاحب اسٹیج پر آئے مگر ناراضگی کے انداز میں فرمانے لگے ! بھائی میرا نام "کلدیپ نیئر” نہیں ” کلدیپ نائر” ہے ۔

اور لفظ "نائر” ہندی ۔ سن سکرت یا کسی اور اجنبی زبان کا نہیں بلکہ عربی کا لفظ ہے اور عربی مسلمانوں کی مذہبی زبان ہے۔اس کے ساتھ ہی نائر کے معنی اور مفہوم بھی بتا دیئے ۔

کہنے لگے کہ کوئی غیر ایسی غلطی کرتا ہے تو دکھ نہیں ہوتا ہے مگر کوئی مسلمان عربی الفاظ کو درست استعمال نہیں کرتا ہے تو دکھ ہوتا ہے۔

کوئی تین سے چار منٹ اسی پر بات کی اور پھر پاک بھارت دوستی پر بولنا شروع ہوئے۔
میں بھی آخری نشست پر بیٹھ کر اس انسان دوست شخص کا خطاب سنتا رہا ۔ ایک ایک لفظ میں سچائی تھی ۔درد تھا۔اپنائیت تھی۔

تحریر : عبدالحبار ناصر

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *