پاکستان آرڈیننس فیکٹری میں ماسک اور سینیٹائزر بھی تیار کرے گا

الرٹ نیوز : کورونا وائرس سے نمٹنے کے لئے آہنی ہاتھوں کا استعمال کیا جانے لگا ، پاکستان کی وزیر دفاعی پیدواری زبیدہ جلال نے با ضابطہ اعلان کیا ہے پاکستان آرڈیننس فیکٹری واہ کینٹ نے 25 ہزار ماسک اور 10 ہزار لیٹر سینیٹائزر روزانہ بنانے کی صلاحیت حاصل کر لی ہے۔

کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے وزیر دفاعی پیداوار زبیدہ جلال نے امید افزا خبر سناتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان آرڈیننس فیکٹری واہ کینت یومیہ 25 ہزار ماسک اور 10 ہزار لیٹر سینیٹائزر بنا سکتی ہے اور بنانا شروع کرے گی ۔

ان کا کہنا ہے کہ خصوصی کپڑے سے تیار فیس ماسک دھو کر دوبارہ استعمال کیے جا سکیں گے ، دفاعی پیداواری صلاحیت سے فیس ماسک اور سینیٹائزر کی پیداوار لی جا رہی ہے۔ زبیدہ جلال کا کہنا ہے کہ آرڈیننس فیکٹری کی قابل ستائش کوششوں سے قومی کوششوں کو تقویت ملے گی اور اس ضمن میں مزید کامیابیوں کی امید بھی کی جا رہی ہے ۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے چین سے ملنے والے کے این 95 ماسک میں 2 لاکھ رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ، جب کہ 3 لاکھ ماسک پنجاب ، کے پی ، بلوچستان ، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کو دیئے جائیں گے .

سوشل میڈیا اس خبر کو بہت سراہا جا رہا ہے کہ دفاعی اداروں کی جانب سے ماسک اور سینیٹائزر بنانے کا اعلان خوش آئند بھی ہے .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں