ایف آئی اے کاآصف علی زرداری اورفریال تالپورکوایک اورنوٹس جاری کرنےکا فیصلہ

ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ بے نامی اور جعلی بینک اکاوئنٹس کے ذریعے منی لانڈرنگ کیس میں آگاہی فراہم نہ کرنے پرایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل کی سربراہی میں بننے والی تحقیقاتی ٹیم سے ناراض نیشنل مینجمنٹ کورس پر اضافی نام شامل کروانے کے بعد رخصت پر چلے گئے ،تحقیقاتی ٹیم نے سابق صدر آصف علی زرداری اور ان کی بہن فریال تالپور کو پیش ہونے کے لئے ایک اور نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ایف آئی اے ذرائع کے مطابق ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ منیر شیخ کا نام109 نیشنل مینجمنٹ کورس (این ایم سی) میں آنے کے بعد وہ رخصت پر چلے گئے ہیں اور آج (بدھ)سے قائم مقام ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ سینئر افسر یونس چانڈیو کو لگائے جانے کا امکان ہے ۔

ایف آئی اے ذرائع نے بتایا کہ ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ منیر شیخ اور ایڈیشنل ڈائریکٹرجنرل ایف آئی اے نجف مرز ا ے درمیان اختیارات پر سرد جنگ گزشتہ کئی دنوں سے جاری تھی جس کی ایک وجہ زونل آفس میں سنیارٹی کے مطابق کون سا دفتر ملے اور دوسرا ایف آئی اے سندھ زون میں بے نامی اور جعلی اکاوئنٹس پر بننے والی تحقیقاتی ٹیم کی جانب سے آگاہی نہ ملنے بھی ہے ۔

ایف آئی اے ذرائع نے بتایا کہ ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ منیر شیخ نے مذکورہ کورس کے لئے اپنا نام آخری لمحات میں کچھ افسران کے کورس سے دستبرار ہونے کے بعد اپنا نام شامل کروایا ہے اور کورس میں نام آتے ہی فورا رخصت پر روانہ بھی ہوگئے ہیں جب کہ ایف آئی اے سندھ زون میں ماضی کے دوران دیکھا گیا ہے کہ پی ایس پی پولیس گروپ سے تعلق رکھنے والے اعلیٰ افسران نے کورس کے ساتھ ساتھ عہدے پر بھی تعینات رہے ۔ذرائع نے بتایا کہ حالیہ دنوں میں زونل آفس میں قائم ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ کے دفتر کو 15اگست سے قبل گلستان جوہر میں قائم ایف آئی اے کے دفتر میں منتقل ہونا تھا تاہم یہ عمل بھی اب رک گیا ہے۔

دوسری جانب ایف آئی اے ذرائع نے بتایا کہ بے نامی اور جعلی اکاوئنٹس کے ذریعے منی لانڈرنگ کے درج مقدمے پر بننے والی تحقیقاتی ٹیم نے سابق صدر آصف علی زرداری اور ان کی بہن فریال تالپور کو ایک بار پھر طلبی کے لئے نوٹس جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور ممکنہ طور پر انہیں رواں ہفتے نوٹس جاری کرکے طلب کیا جائے گا ۔ اس ضمن میں وقف جاننے کے لئے روزنامہ دنیا نے ڈائریکٹر ایف آئی اے سندھ منیر شیخ اور ایڈیشنل ڈائریکٹرجنرل نجف مرزا سے رابطہ کرنے کی کوشش کی تاہم دونوں افسران نے فون اٹھانے سے گریز کیا ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *