کراچی والے 3 دن تک گھروں سے مت نکلیں ، وزیر اعلی سندھ

الرٹ نیوز : کراچی میں وائرس سے پہلی ہلاکت ‘ شہرمیں متاثرہ مریضوں کی تعداد 98 جبکہ ملک بھر میں 500 تک پہنچ گئی ۔ سندھ میں کیسزکی تعداد 252 ‘ پنجاب 96 ‘ بلوچستان 92 اور خیبر پختونخوامیں 23 ہوگئی ہے جبکہ وباء کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے بلوچستان میں لاک ڈاؤن کر دیا گیا ہے .

وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے شہریوں سے اپیل کی ہے کہ وہ تین دن گھروں میں محدود رہیں اورہفتہ ‘ اتوار اور پیر کی چھٹیوں میں غیر ضروری طورپر گھروں سے باہر نہ نکلیں ‘ سڑکوں اور گلیوں میں اِدھر اُدھر جانے کی ضرورت نہیں ہے ۔ حکومت سندھ نے کورونا وائرس کی صورتحال کے پیش نظر صوبے میں تمام ترقیاتی فنڈز منجمد کردئیے ہیں ، جبکہ مراد علی شاہ کی جانب سے شعبہ صحت کے 3 نجی پارٹنرز کو83 کروڑ50 لاکھ روپے جاری کردیئے گئے ہیں۔

صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو نے اپنے ویڈیو بیان میں کہا ہے کہ کورونا کےباعث انتقال کر جانے والے مریض کی عمر 77 سال تھی ، جس کا کراچی سے تعلق ہے ۔ اور وہ کینسر ، ذیابیطس اور بلڈ پریشر سمیت دیگر امراض میں مبتلا تھا ‘ مریض پر جب کورو ن ا وائرس نے حملہ کیا تو وہ جانبر نہ ہوسکا ۔ ان کا کہنا تھا کہ بزرگوں کا خصوصی خیال رکھنے کی ضرورت ہے ۔ وزیرِ صحت سندھ نے کہا کہ کورونا وائرس اب مقامی لوگوں میں پھیل رہا ہے جبکہ پہلے یہ بیرونِ ملک سے آنے والے لوگوں کے ذریعے پھیلا تھا۔ اب کورونا وائرس ہماری کمیونٹی میں آ چکا ہے اور لوگوں کو متاثر کر رہا ہے اسلئے ہمیں بہت زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔

دوسری جانب صوبائی محکمہ صحت کی ترجمان میران یوسف نے بتایا کہ کراچی میں متاثرہ مریضوں کی تعداد 98 ہوگئی ہے جن میں سے تین صحتیاب ہوئے اورایک کی ہلاکت ہوئی جبکہ 94 مریضوں کا علاج جاری ہے ۔ایک مریض حیدرآباد میں ہے جبکہ سکھر میں مریضوں کی تعداد 191 ہے ،مجموعی طور پرسندھ میں کیسز کی تعداد 249 ہوگئی ہے ۔

ادھر وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کوروناوائرس سے متعلق ٹاسک فورس کے 23 ویں اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے لوگوں پر زور دیا ہے کہ وہ آئندہ تین دن بطور ’’رضا کارانہ تنہائی ‘‘ اختیار کریں تا کہ ہر ایک اپنے آپ کو محفوظ رکھ سکے۔ سڑکوں اور گلیوں میں اِدھر اُدھر جانے کی ضرورت نہیں ہے۔ مراد علی شاہ نے کہا کہ پاکستانی عوام وائرس کے خلاف بہادری سے نبردآزما ہیں ‘ وقت آ گیا ہے کہ رضا کارانہ طور پر ایک ذمہ دارانہ رویہ کا مظاہرہ کیا جائے اور رضا کارانہ طور پر سوشل سرگرمیاں معطل کی جائیں یہ تب ہی ممکن ہے جب ہم سب اپنے گھروں پر ہی رہنے کو ترجیح دیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ انہیں حیرت ہوئی کہ ان تعطیلات کے دوران کچھ لوگ اپنے گھروں میں خاندانی اجتماعات کرکے انکی میزبانی کر رہے ہیں ۔ یہ معاشرتی اجتماعات کا وقت نہیں بلکہ معاشرتی دوری اختیار کرنے کا ہے ۔ وزیراعلٰ سندھ نے کہا کہ مقامی ٹرانسمیشن کے کیسز 51 ہو چکے ہیں اور یہ میرے اور ہر ایک کیلئے تشویشناک ہے ، جو اس صورتحال کو سمجھتا ہے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے ہدایت کی کہ ایکسپو سینٹر میں بیت الخلاء اور عملے کیلئے آرام کرنے کی جگہیں بنائی جائیں ۔ سرکاری شعبے کے اسپتال نے اپنی روزانہ کی رپورٹ میں 1874 مشتبہ افراد کی نشاندہی کی ہے ان میں سے 21 افراد کا ٹیسٹ لیا گیا۔ پرائیویٹ ہسپتالوں نے 702 مشتبہ افراد کی فہرست دی ہے ان میں سے 5 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے ہیں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *