حکومت سندھ اسکول مالکان کو ریلیف فراہم کرے ، شرف الزمان

الرٹ نیوز : پرائیویٹ اسکولز مینجمنٹ ایسو سی ایشن (پسما) کے چیئرمین شرف الزماں نے وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ ، صوبائی وزیر تعلیم سعید غنی اورڈائریکٹر جنرل پرائیویٹ انسٹی ٹیوشنز سندھ منسوب حسین صدیقی کے نام ایک کھلا خط لکھ کر مطالبہ کیا ہے کہ کہ خدا را نجی اسکولز کے غیر تدریسی اسٹاف کو حکومت سندھ کے ریلیف فنڈ سے امداد فراہم کر کے اپنا اخلاقی فرض ادا کریں .

حکومت 20 لاکھ راشن کے تھیلوں کی تقسیم میں کم فیس لینے والے نجی اسکولز کے غیر تدریسی عملے کو بھی شامل کرے ، انہوں نے کہا 3 ماہ تک اسکولز بند رکھنے سے کم فیس لینے والے تعلیمی ادارے مالی بحران کا شکار ہو جائیں گے ، کیونکہ موجودہ صورت حال میں سوچے سمجھے بغیر نجی تعلیمی اداروں کو بند کیا گیا ہے .

ان اسکولوں کو سٹی حکومت ، صوبائی حکومت اور وفاقی حکومت سمیت کسی بھی ملکی و غیر ملکی اداروں سے ایک پیسہ بھی امداد نہیں ملتا ، جنہیں 24 فروری سے 30 مئی تک بند رہنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں ، جس سے تمام نجی اسکولز کے سربراہان ، تدریسی وغیر تدریسی اسٹاف اور ان کے اہل خانہ ، نجی اسکولز کے منتظمین اور اسکولز کی عمارتوں کے مالکان بھی بھوک و افلاس کا شکار ہو جائیں گے .

شرف الزماں نے کہا کہ نجی اسکولز جو صرف اور صرف طلباء کی فیس سے چلتے ہیں ، اگر تین ماہ سے زائد کے لیے حکومتی فیصلے کے مطابق بند رہیں گے تو ان تین ماہ میں اسکولز کی فیسوں کی وصولی بھی روک جائے گی ، انہوں نے کہا کہ صوبہ سندھ میں 20 ہزار سے زائد اسکولز، کالجز، کوچنگ سینٹرز اور دیگرتعلیمی ادارے حکومت کا تعلیم کے شعبے میں 70 فیصد سے زائد ہاتھ بٹا رہے ہیں ، اس کے علاوہ سندھ کے لاکھوں تعلیم یافتہ افراد کو ملازمتیں بھی فراہم کررہا ہے ، جس سے سندھ میں بڑی حد تک بے روز گاری کے خاتمے میں کمی واقع ہوئی ہے .

شرف الزماں نے کہا کہ یہ نجی تعلیمی ادارے حکومت کو ڈائریکٹیوریٹ پرائیویٹ انسٹی ٹیوشنز سندھ ، ثانوی تعلیمی بورڈ ، EOBI ، سوشل سیکورٹی ،انکم ٹیکس ، ود ہولڈنگ ٹیکس ، پانی ، بجلی ، گیس ، کمرشل ریٹس لیبر ٹیکس ، پروفیشنل ٹیکس اورسائن بورڈز ٹیکس کی مد میں کروڑوں روپے ریونیو برس ہا برس سے ادا کر رہے ہیں مگر اس کے با وجود پرائیویٹ اسکولز کی خدمات کو پس پشت ڈال کر میڈیا ، سوشل میڈیا ،ڈائریکٹوریٹ ،وزارت تعلیم اور دیگر ادارے مسلسل اساتذہ کی تذلیل میں مصروف ہیں .

انہوں نے کہا کہ نجی تعلیمی اداروں اور ان کے اساتذہ کی تذلیل بند کی جائے ، استاد کے ادب و احترام کوملوظ و خاطر رکھا جائے ، کیونکہ استاد ہی قوم کے نو نہالوں کی تعلیم و تربیت کا اہتمام کرتے ہیں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *