وزارت داخلہ نے NADRA سمیت تمام سرکاری و نیم سرکاری دفاتر بند کردیئے

الرٹ نیوز: وزارت داخلہ نے کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے اہم فیصلہ کرتے ہوئے تمام سرکاری و نیم سرکاری دفاتر کو دو ہفتوں کے لئے بند کردیا۔

وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے ٹوئٹ کرتے ہوئے بتایا ہے کہ حکومتی فیصلے کے تحت نادرا ، پاسپورٹ اینڈ امیگریشن ، سی ڈی اے کے ون ونڈو سمیت تمام ایسے شعبہ جات جہاں عوام کا براہ راست عمل دخل اور ڈیلنگ شامل ہے اسے بھی دو ہفتوں کے لیئے بند کردیا گیا ہے۔

حکومتی فیصلے کے تحت نادرا ،پاسپورٹ اینڈ امیگریشن ، سی ڈی اے کے ون ونڈو سمیت دیگر تمام ایسے شعبہ جات جہاں لوگوں کا براہ راست عمل دخل اور ڈیلنگ شامل ہے اسے بھی *دو ہفتوں* کے لیئے بند کردیا گیا ہے-

کرونا وائرس کے ممکنہ خدشات کے پیش نظر 15 دنوں کیلئے نادرا ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن، پراپرٹی دفاتر، پارلرز اور بیوٹی سیلون بھی بند رہیں گے، شاپنگ مال رات 10 بجے بند کردیئے جائیں گے، تاہم عوام کی سہولت کے پیشِ نظر ریستوران، فوڈ آؤٹ لیٹ کھلے رہیں گے جہاں صرف ٹیک اوے (کھانا گھر لے جانے) کی سہولیات میسر رہیں گی۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ نزلہ زکام، بخار یا کسی بیماری میں مبتلا ملازمین گھر سے کام کریں، دفاتر میں ڈے کیئر سینٹرز بند رہیں گے، وہ خواتین اسٹاف اور ملازمین جو کم عمر/نوزائیدہ بچوں کی مائیں ہیں انہیں گھر سے اپنے امور انجام دینے کی اجازت ہے۔ پبلک سروس ڈیلیوری کے تمام دفاتر بند رہیں گے۔

فردوس عاشق اعوان نے مزید کہا کہ عوام کا تحفظ اور سلامتی ہماری اولین ترجیح ہے۔ 15 دنوں کیلئےحکومت نے تمام وفاقی دفاترو ملازمین کیلئے احکامات جاری کردیے ہیں۔ اہم امور پر تعینات عملہ و افسران اپنی حاضری یقینی بنائیں گے، 50 سال یا زائد عمر کے ملازمین کو گھر سے کام کرنے کی ہدایت کی جاتی ہے۔

نادرہ کو بند کرنے سے خود نادرہ افسران و ملازمین میں خوشی پائی جارہی ہے کیوں کہ وہاں پر علاقے سے آنے والے افراد کی کثیر تعداد موجود رہتی ہے جبکہ افسران و ملازمین اپنی مرضی سے چھٹی کرسکتے تھے نہ ہی آنے والوں کے لئے کوئی حفاظتی تدابیر موجود تھیں .

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں