ختم بخاری میں گل پاشیاں کیوں ؟

بلاگ : مفتی توصیف احمد

مدارس دینیہ میں آج کل عجب رسم چل پڑی ہے ۔ شیخ الحدیث صاحبان ختم بخاری کے سلسلے میں تشریف لارہے ہیں اور طلباء گل پاشی کررہے ہیں ، مجھے تو اس کی کوئی وجہ سمجھ نہیں آ رہی ، ہمارے زمانے میں تو ان باتوں کو درست نہیں سمجھا جاتا تھا اب مدارس دینیہ بھی روایت سے نکل رہے ہیں ۔

اس کے ساتھ ساتھ ختم بخاری پر جلسہ عام فرض کی حیثیت اختیار کرچکا ہے ، مجھے یاد ہے استاذی شیخ الحدیث صوفی محمد سرور صاحب نور اللہ مرقدہ (سابق شیخ الحدیث جامعہ اشرفیہ لاہور ) نے بخاری شریف کا آخری سبق پڑھایا ، کسی کو کانوں کان خبر تک نہ تھی ۔مگر آج کل بخاری شریف کے ختم ہیں اور بے بہا ختم ہیں ،ہے کوئی رجل رشید جو نوٹس لے ۔

اس کے علاوہ طلباء نے بھی ولیمہ کا سماں باندھا ہوتا ہے ، ہار پہنائے جارہے ہیں ، کارڈ چھپوائے جارہے ہیں ۔ کیا یہ احساس کمتری ہے یا تفاخرعلمی ؟

فاضل بلاگر ایم فل ہیں ، جامعہ اشرفیہ لاہور کے متخصص ہیں . آج کل محکمہ تعلیم کے شعبہ تدریس سے وابستہ ہیں .

Show More

2 Comments

  1. دینی مدارس کی تقریبات کے حوالے سے فاضل بلاگر سے اختلاف رکھا جاسکتا ہے ۔
    خوشی کا موقع ہوتا ہے ، سالہا سال انتظار بسیار کے بعد یہ مرحلہ آتا ہے ، مساجد کی بے حرمتی کی کسی صورت اجازت نہیں دی جاسکتی مگر اپنے ماحول میں خوشی کی تقریبات کے اہتمام ہوں تو کیا مضائقہ ہے ۔ اس دور میں بھی سادہ تقریبات کی بسیار مثالیں موجود ہیں، علم دین کو کسی درجے تک پہنچانا بھی خوشی سے کم نہیں اور پھر اکابر علماء کرام بذات خود ان کی حوصلہ افزائی کیلئے شریک ہوتے رہتے ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close