ہفتہ, نومبر 26, 2022
ہفتہ, نومبر 26, 2022
- Advertisment -

رپورٹر کی مزید خبریں

تازہ تریندنیا بھر میں سالانہ چھاتی کے سرطان کے تقریباً 10 لاکھ کیسز...

دنیا بھر میں سالانہ چھاتی کے سرطان کے تقریباً 10 لاکھ کیسز ہوتے ہیں : ڈاکٹر سکندر شیروانی

کراچی : وفاقی اردو یونیوسٹی، ہائیر ایجوکیشن کمیشن اور میڈیکل مائکرو بائیو لوجی کی باہمی تعاون سے سرطان کی آگاہی کے متعلق سیمینار منعقد کیا گیا ، جس میں کثیر تعداد میں اساتذہ اور کثیر تعداد میں طالبات نے شرکت کی اور اس مشن کو پورا کرنے کی بارے میں آگاہ کیا ۔

اس موقع پر ڈاکٹر شازیہ فاطمہ (ڈائریکٹر کرن اسپتال) نے کہا کہ ہر سال پاکستان میں 40 ہزار خواتین چھاتی کے کینسر کا تاخیر سے معلوم ہونے کے باعث انتقال کر جاتی ہیں۔ چھاتی کے کینسر کی وجوہات کے بارے میں علم نہیں ہے، اس لیے اس بیماری کا جلد پتہ لگانا چھاتی کے کینسر پر قابو پانے کا بنیادی ستون ہے۔ جب چھاتی کے کینسر کا جلد پتہ چل جاتا ہے، اور اگر مناسب تشخیص اور علاج دستیاب ہوتا ہے، تو چھاتی کے کینسر کے ٹھیک ہونے کا ایک اچھا امکان ہوتا ہے۔ تاہم، اگر دیر سے پتہ چلا تو، علاج کا اکثر اختیار نہیں رہتا۔

ڈاکٹر سکندر شیروانی (کوآرڈینیٹر، بریسٹ کینسر اورینس پروگرام) نے کہا کہ دنیا بھر میں، ہر سال چھاتی کے سرطان کے تقریباً 10 لاکھ کیسز ہوتے ہیں۔ اور پورے ایشیاء میں پاکستان میں یہ بیماری سر فہرست ہے۔ پاکستان میں 9 خواتین میں سے 1 خاتون کو چھاتی کے کینسر کا زیادہ خطرہ ہے۔

مذید پڑھیں : کراچی :‌ کانسٹیبل کے قاتل کے بعد DC نوشہرو فیروز بھی FIA حکام کی مہربانی سے فرار

سیمینار میں ڈاکٹر زیبا عمران، ڈاکٹر مہہ جبین ، ڈاکٹر صائمہ فراز، ڈاکٹر صائمہ خالق، ڈاکٹر منزہ اعجاز، ڈاکٹر نزہت فاطمہ اور ڈاکٹر عطیہ حسن بھی شریک تھیں۔ ڈاکٹر اصغر علی (کرن اسپتال کینسر یونٹ) نے طالبات کو آگاہی دیتے ہوئے کہا کہ اس بیماری کے خاتمے کیلئے ہمارا ساتھ دیں اور طالبات کو بتایا کہ بروقت اس کی تحقیق اور علاج سے ہم کئی قیمتی جانیں بچا سکتے ہیں۔

پروفیسر لبنیٰ انیس (فوکل پرسن، بریسٹ کینسر اورینیس پروگرام) نے اس سیمینار میں چھاتی کے سرطان میں مبتلا خواتین کو آگاہ کیا اور اس بات پر زور دیا کہ وہ اپنی غذا میں پھلوں کا استعمال زیادہ کریں کیونکہ پھلوں میں اینٹی آکسیڈنٹ موجود ہوتا ہے۔ اور ریسرچ سے یہ بات واضح ہو چکی ہے کہ انٹی آکسیڈنٹ چھاتی کے سرطان سے لڑنے کے لیے بہت مفید ہے۔ اور طالبات کو کہا کہ اس بیماری کے خاتمے کیلئے ہمارا ساتھ دیں۔ بروقت اس کی تحقیق اور علاج سے ہم کئی قیمتی جانیں بچا سکتے ہیں۔ پروگرام کے اختتام پر مہمانوں کو شیلڈ اورطلبہ کو سرٹیفکیٹ دیئے گئے ۔

اختر شیخ
اختر شیخhttps://alert.com.pk
اختر شیخ (چیف رپورٹر کراچی) جن کی صحافتی جدوجہد 3 دہائیوں پر مشتمل ہے، آپ الرٹ نیوز سے منسلک ہونے سے قبل آغاز نیوز ٹائم، روزنامہ مشرق، روزنامہ بشارت اور نیوز ایجنسی این این آئی کے ساتھ مختلف عہدوں پر کام کیا ہے۔ اختر شیخ کراچی پریس کلب کے ممبر ہیں اور کے یو جے (برنا) کی بی ڈی ایم کے ممبر بھی ہی۔
متعلقہ خبریں