ہفتہ, نومبر 26, 2022
ہفتہ, نومبر 26, 2022
- Advertisment -

رپورٹر کی مزید خبریں

تازہ ترینسندھ: کرپٹ ڈپٹی سیکریٹری کے انتخاب پر سپلا کی وزیر اعلیٰ، وزیرِ...

سندھ: کرپٹ ڈپٹی سیکریٹری کے انتخاب پر سپلا کی وزیر اعلیٰ، وزیرِ تعلیم اور چیف سیکریٹری سے نوٹس لینے کی اپیل

سندھ پروفيسرز اينڈ ليکچررز ايسوسی ايشن ( سپلا) ضلع وسطی کے زیرِ اہتمام گورنمنٹ کالج برائے خواتین نارتھ ناظم کے باہر ‘اسٹاپ کرپشن سیو ایجوکیشن” تحریک کے دوسرے مرحلے کے حوالے سے محکمہ کالج ایجوکیشن میں بائیو میٹرک مشین کی خریداری میں میگا کرپشن سمیت اس کی آڑ میں اساتذہ کی توہین و تذلیل کے خلاف صوبہ سندھ کے دیگر اضلاع کی طرح بھرپور احتجاج کیا گیا۔

احتجاجی مظاہرے سے سپلا کے مرکزی صدر منور عباس، کراچی ریجن کے صدر کریم احمد ناریجو، عامرالحق، عارف يونس، عصمت جہاں، شبانہ افضل، ڈاکٹر غلام رسول لاکھو، رسول قاضی ، نہال اختر، رضیہ سلطانہ، نزاکت علی و دیگر نے کیا۔

مزید پڑھیں:غازی فاؤنڈیشن اسکول کے واقعہ کا دوسرا رخ بھی سامنے آ گیا

سپلا کے رہنماؤں نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ سندھ کے کالج اساتذہ گذشتہ کئی روز سے کرپٹ مافیا کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔

سیکریٹری کالج ایجوکیشن سے تین ملاقاتیں بھی کر چکے ہیں۔ سیکریٹری کالج ایجوکیشن کی سوچ بہت مثبت ہے ، مگر اس کے باوجود اساتذہ کی توہین کرنے والے ، بدنامِ زمانہ اور کرپشن کے سرغنہ کو ڈپٹی سیکریٹری بنانے کی تیاریاں مکمل ہو چکی ہیں۔

مزید پڑھیں:مجاھد کالونی ایکشن کمیٹی کے وفد کی PMLN سندھ کے صدر اور ڈائریکٹر جنرل کچی آبادی سے ملاقات

سپلا کے رہنماؤں نے وزیرِ اعلیٰ، وزیرِ تعلیم اور چیف سیکریٹری سے اس عمل کا نوٹس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ آخر کیا وجہ ہے کہ سی کیپ کو تباہ کرنے والے، کراچی کے کئی کالجز سے پرنسپل کو اعتماد میں لیے بغیر آرٹس فیکلٹی کو اچانک ختم کردینے والے، کالج پرنسپلز سمیت کالج اساتذہ سے بدتمیزی اور دھمکی آمیز رویہ رکھنے والے شخص پر اتنی نوازشات کی بارش کیوں کی جارہی ہیں؟

سپلا کے رہنماؤں نے کہا کہ کرپشن ایک ناسور کی صورت اختیار کر چکی ہے، اب وقت آچکا ہے کہ کرپشن کی بیخ کنی کی جائے۔

متعلقہ خبریں