ہفتہ, نومبر 26, 2022
ہفتہ, نومبر 26, 2022
- Advertisment -

رپورٹر کی مزید خبریں

اسلامجو حسن ابدال آیا ، یہیں کا ہو کر رہ گیا

جو حسن ابدال آیا ، یہیں کا ہو کر رہ گیا

تحریر : مفتی تاج الدین ربانی 

تاج الدین ربانی امیر جمعیت علماء اسلام ضلع اٹک

میری مختصر آپ بیتی

2 جنوری 1996 کو میں نے بطور امام و خطیب حسن ابدال کا مرکزی مسجد ، محلہ اندرون حسن ابدال اور اس سے ملحقہ مدرسہ اشرفیہ تعلیم القرآن کی نگرانی سے یہاں دینی خدمات کا آغاز کیا ۔ الحمدللہ یہ سلسلہ 3 ستمبر 2003 تک چلا اور جو محبت اور دینی کاموں کیلئے تعاون یہاں ملا وہ ، وہ ہے جس نے مجھے یہیں کا بنا دیا ۔

یہاں مجھ سے پہلے اور میری موجودگی میں بڑے اکابرین نے کام کیا ہے ، اللہ تعالیٰ قبول فرمائے ، آمین یہاں مسالک کے درمیان میں باھمی رواداری اور برداشت کا مظاہرہ ہے کہ کبھی بھی کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا ۔ یہاں مجھے کبھی بھی دینی اور کٹر سیاسی کام کرنے میں کوئی رکاوٹ پیدا نہیں ہوئی ۔

یہاں جمعیت علماء اسلام تحصیل اور ضلعی جماعت کے ساتھ مل کر کام کا آغاز کیا ، 15 سال نائب امیر ضلع اٹک رہنے کے بعد اب امیر ضلع کی ذمے داری ہے ۔ دو دفعہ جنرل الیکشن میں حصہ لیا ،  2013 میں این اے 59 اٹک سے اور 2018 میں پی پی 3 اٹک تین سے
عوام اور علماء کرام نے تعاون کیا محبت سے نوازا ، تو معلوم ہوا کہ گرو نانک اور ولی قندہاری صاحب بھی یہاں آ کر کیسے اٹک گیے ۔

میں بھی یہاں دوماہ کیلئے آزمائشی طور آیا تھا کہ جامعہ تعلیم القرآن راجہ بازار بطور مدرس استاذ محترم حضرت ڈاکٹر نظام الدین شامزئی صاحب رحمۃ اللہ علیہ نے جانشین شیخ القرآن مولانا اشرف علی صاحب کے حوالے کیا تھا ۔ لیکن رب العزت نے میری روزی یہاں لکھ دی تھی ۔

مزید پڑھیں : کراچی میں اسرائیلی ہتھیاروں کی فروخت کا انکشاف

تو 5 سال یہاں سے روزانہ جا کر 1996 پہلے تعلیمی سال ، شرح جامی ، سلم العلوم، جلالین ثانی ، ھدایہ ثالث پڑھایا اور میں اپنے رب سے بھی راضی ہوں اور یہاں کے عوام سے بھی بہت خوش ہوں ۔2001 حج کے دنوں کچھ دعاؤں کا اہتمام کیا تھا ، غالباً اس کی قبولیت اور اللہ تعالیٰ کے فضل سے مجھے یہاں سے 5 کلو میڑ کے فاصلے پر مین ہزارہ روڈ پر ایک بڑے منصوبے پر کام کا موقع ملا ۔ الحمدللہ رب العالمین ، تو وہاں سے مجھے موہڑہ چوک منتقل ہونا پڑا ، لیکن غمی خوشی کے ساتھ سیاست اور دینی مصروفیات اب بھی حسن ابدال میں ہیں ۔ اللہ تعالیٰ تمام دوستوں کو خوش رکھے ۔ آمین

یہاں آ کر مدرسے کا آغاز کیا اور ایک بڑا منصوبہ سوچ کر حفظ قرآن کریم سے آغاز کیا ، جو آہستہ آہستہ یہاں تک پہنچ گیا ، الحمدللہ ، تمام حضرات کے تعاون اور بزرگوں سے دعائیں لے کر کام شروع کیا ۔

جہاں ابھی تک

  • مفتی اعظم پاکستان مفتی محمد رفیع عثمانی صاحب
  • مفتی زرولی خان صاحب مرحوم
  • شیخ الحدیث حضرت مولانا فضل محمد صاحب کراچی
  • مولانا عطاء الرحمن صاحب
  • مولانا عبد الغفور حیدری صاحب
  • شیخ الحدیث مفتی غلام الرحمن صاحب
  • شیخ الحدیث مولانا غلام حبیب صاحب
  • شیخ الحدیث مولانا قاری سعید الرحمن صاحب
  • شیخ الحدیث مولانا عبد السلام صاحب
  • شیخ الحدیث حضرت مولانا ظہور الحق صاحب
  • مولانا امداد اللہ صاحب بنوری ٹاؤن
  • مولانا امجد خان صاحب لاھور
  • شیخ الحدیث مولانا محمد امتیاز خان صاحب
  • قائد پنجاب حضرت قاری عتیق الرحمن صاحب

دیگر حضرات یہاں بار بار تشریف لائے ۔  یہاں 15 سال سے تخصص فی الفقہ کی کلاس اور دورہ حدیث بنات میں جاری ہے ۔ جب کہ حفظ و گردان کے علاؤہ درس نظامی بنین ،  درجہ سادسہ تک جاری ہے ۔

مذید پڑھیں : میرے پہلے معلم !

15 کنال پر جامعہ کا جدید تعمیراتی منصوبہ پر کام جاری ہے ، جہاں عظیم الشان مسجد کے علاؤہ دیگر شعبہ جات کیلئے انتظام ہے ۔ اللہ تعالیٰ اپنے فضل سے قبول فرمائے ۔ آمین اور نیک تمناؤں میں کامیابی نصیب فرمائے آمین ۔ 15 علماکرام شعبہ بنیں 8معلمات بنات میں 4قاری حضرات حفظ و ناظرہ میں مصروف عمل ہیں ۔ اللہ تعالیٰ سب کی مساعی قبول فرمائے آمین ۔

متعلقہ خبریں