تحریک انصاف کے رہنما اور نشے میں مبتلا شخص نے بیوی کو قتل کر دیا

اسلام آباد : پاکستان تحریک انصاف اسلام آباد راولپنڈی کے مقامی رہنما شاہ نواز امیر نے بیوی کو قتل کر دیا ہے ۔ مقتول ایاز امیر کی دوسری اہلیہ کا بیٹا تھا اور مبینہ طور پر نشہ بھی کرتا تھا ۔

کالم نگا ایاز میر کا بیٹے نے دو روز قبل اپنی 37 سالہ اہلیہ سارہ کو چک شہزاد میں سر پر ڈمبل (ہیلتھ کلب میں ایکسر سائز کے لئے استعمال ہونے والا ٹول) مار کر قتل کر دیا تھا ۔ شاہ نواز امیر مبینہ طور پر کوکین کے نشے میں مبتلا تھا ۔

شاہ نواز امیر نے اہلیہ کو قتل کیا اور پھر گھر سے فرار ہونے کی کوشش کی لیکن والدہ نے پولیس کو بر وقت اطلاع کر دی اور اہلکاروں نے موقع پر پہنچ کر شاہ نواز کو گرفتار کر لیا تھا ۔ مقتولہ سارہ کی لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے پمز ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا ۔

فیملی ذرائع کا کہنا ہے کہ سارہ گزشتہ روز ہی دبئی سے واپس آئی ، وہ دبئی میں ملازمت کرتی تھیں اور انہوں نے آتے ہی گاڑی بھی خریدی تھی ،گزشتہ رات سے دونوں کے درمیان تکرار شروع تھی جو کہ جھگڑے میں تبدیل ہوئی، صبح جب والدہ نے دیکھا تو سارہ مردہ حالت میں کمرے میں موجود تھی ، شاہ نواز نے بیوی کی ڈیڈ باڈی کو اٹھایا اور واش روم میں لے جا کر ٹب میں رکھ دیا پھر پانی کھول دیا ، والدہ نے جب یہ منظر دیکھا تو انہوں نے فوری پولیس کو اطلاع دی ۔

مذید پڑھیں : ٹرانس جینڈر بل پر کالعدم تحریک طالبان پاکستان کا موقف سامنے آ گیا

سارہ کینیڈین نژاد تھیں اور شاہ نواز کی ان کے ساتھ تیسری شادی تھی ، دونوں کی ملاقات سماجی رابطوں کی ویب سائٹ کے ذریعے ہوئی اور پھر انہوں نے تین ماہ قبل شادی کر لی تھی ۔

پولیس ترجمان نے بتایا ہے کہ ایاز امیر کے بیٹے شاہ نواز کو حراست میں لے لیا گیا ہے ۔ ترجمان اسلام آباد پولیس کا کہنا ہے کہ واقعے کی جگہ کا فارنزک مکمل کر لیا گیا ہے ۔

صحافی نے سوال کیا کہ ایسا کہا جا رہا ہے کہ شاہ نواز نشے میں تھا ؟ ایاز امیر نے جواب دیا کہ قانونی معاملہ ہے، اس بارے میں کیا کہہ سکتا ہوں؟ تاہم ایسا واقعہ کسی کے ساتھ بھی پیش نہ آئے ۔

زرائع کے مطابق ‏ایاز میر کی دوسری اہلیہ سے شاہ نواز امیر بھی تھا جس کی والدہ کو ایاز امیر نے چھوڑ دیا تھا ۔ ادھر غیر مصدقہ اطلاعات کے مطابق ذوالفقار علی بھٹو کے وزیر قانون اور اطلاعات حفیظ پیرزادہ سابق اہلیہ سے ایاز میر دوسری شادی کی تھی ۔ بعد ازاں اسے طلاق دے دی تھی جو واپس حفیظ پیرزادہ کے نکاح میں چلی گئی تھیں ۔