شہریوں کو لاپتہ کرنا آئین پاکستان کی خلاف ورزی ہے، رانا ثناء اللہ

وزیرداخلہ رانا ثناء کا رکن قومی اسمبلی نور عالم خان کے گھر پر حملے کا سخت نوٹسوزیرداخلہ رانا ثناء کا رکن قومی اسمبلی نور عالم خان کے گھر پر حملے کا سخت نوٹس

کراچی()وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے کہا ہے کہ شہریوں کو لاپتہ کرنا آئین پاکستان کی خلاف ورزی ہے ،موجودہ حکومت کی کوشش ہے کہ یہ مسئلہ جلد از جلد حل ہو اس سے بین الاقوامی سطح پر ملک کی بدنامی ہورہی ہے،۔

وات میں دوبارہ دہشتگردی کی باتیں افواہ ہیں ہمارے سیکورٹی ادارے الرٹ ہیں ،مسٹر ایکس اور مسٹر وائی کا عمران خان کو ہی پتہ ہوگا وہ ہمت کریں اور ان کا نام بتا دیں،ڈاکٹرخالد مقبول صدیقی نے کہا کہ ہم ایسی بدنصیب ریاست میں رہتے ہیں جہاں لوگوں کو لاپتہ کرنا جرم تصور نہیں کیا جاتا،لاپتہ افراد کے معاملے پر ہر قانون سازی کرنے کو تیار ہیں۔

منگل کو وزیراعظم پاکستان شہباز شریف کی ہدایت پر وفاقی وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ ن لیگی رہنما ایاز صادق کے ہمراہ
ایم کیو ایم کے عارضی مرکز بہادر آباد پہنچے تو وہاں لاپتہ کارکنوں کے بزرگ والدین اور بچے اپنے پیاروں کی تصاویر اٹھائے جمع تھے،،،

لاپتہ کارکنوں کے بوڑھے والدین نے آنسووں کے ساتھ بیان کیا اور اپنے پیاروں کی واپسی کیلئے مدد کی درخواست کی۔وفاقی وزیر داخلہ نے لاپتہ کارکنوں کے پیاروں سے خطاب _کرتے ہوئے کہا کہ اللہ کے دیر ہے اندھیر نہیں،،مظلوم کی آہ براہ راست اللہ کے پہنچتی ہے، کوئی کتنا بھی بڑا ظالم ہو اس کا ظلم ختم ہو کر رہتا ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ نے بعد میں ایم کیو ایم کے سینئر کنوینئر خالد مقبول صدیقی اور رابطہ کمیٹی کے دیگر اراکین سے بھی ملاقات کی اور انہیں گذشتہ ہفتے قتل ہونے والے ایم کیو ایم کے کارکنوں کے حوالے سے کی جانے والی تحقیقات سے بھی آگاہ کیا۔

صحافیوں سے بات چیت میں وزیر داخلہ نے کہا کہ لاپتہ افراد کا معاملہ دنیا بھر میں پاکستان کی بدنامی کا باعث بن رہا ہے

خالد مقبول صدیقی نے وزیر داخلہ کو کراچی میں لاپتہ افراد کے اہل خانہ سے ملاقات کیلئے بھیجنے پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا اپیل کہ کی لوگوں کو لاپتہ کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے۔_