عباسی شہید اسپتال میں صفائی کے نام پر 4 کروڑ روپے ہڑپنے کی تیاری

کراچی : عباسی شہید اسپتال میں صفائی ستھرائی اور نگرانی کے لئے گزشتہ مالی سال کے ادھورے ٹینڈر کو رواں مالی سال میں خلاف ضابطہ منظوری کی کوششیں شروع کر دی گئیں ۔

بجٹ میں اسپتال کی صفائی کے لئے 2 کروڑ کی مختص رقم کو ٹینڈر میں چار کروڑ کر دیا گیا ۔ کراچی میونسپل کارپوریشن کے ماتحت عباسی شہید اسپتال سینئر ڈائریکٹر میڈیکل ہیلتھ اینڈ سروسز کراچی نے گزشتہ مالی سال میں اپریل میں اسپتال کی صحت کے اصولوں کے مطابق صفائی ستھرائی اور نگرانی کے لئے ٹینڈر جاری کیا گیا تھا ۔

جس کے لئے باقاعدہ اشتہار جاری کیا گیا اور اسے اسپتال کے ٹراما سینٹر ،اولڈ بلڈنگ ،ای این ٹی اور آئی وارڈ کے لئے مختص کیا گیا تاہم گزشتہ مالی سال میں اس ٹینڈر کو ادھورا چھوڑ دیا گیا ۔

مذید پڑھیں : چکرا گوٹھ میں DHA کی لائن پر ایک اور ہائیڈرنٹ قائم کر لیا گیا

واضح رہے کہ سندھ حکومت کو کے ایم سی کے اسپتالوں کے لئے جاری بجٹ میں عباسی شہید اسپتال میں صفائی ستھرائی کے لئے 2 کروڑ روپے کا بجٹ ہر مالی سال میں مختص کیا جاتا ہے ۔

تاہم عباسی شہید اسپتال میں گزشتہ چند برس سے صفائی ستھرائی کی ابتر صورتحال ہے جہاں مریضوں کے ساتھ ان کے تیمارداروں کو بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جب کہ ڈاکٹروں اور طبی عملے کو بھی اسپتال انتظامیہ سے شکایات ہیں حالیہ دنوں میں عباسی شہید اسپتال کی سوشل میڈیا پر متعدد ویڈیو ز جاری ہوئیں جس پر شہری حکومت اور اسپتال انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا ۔

مذید پڑھیں : کریم آباد EOBI ریجنل آفس افسران کی کمائی کا ذریعہ بن گیا

اس دوران سینئر ڈائریکٹر میڈیکل ہیلتھ افسر کے دفتر سے گزشتہ مالی سال کے جاری ادھورے ٹینڈر کو من پسند ٹھیکدار کو دینے کے لئے اسی ٹینڈ ر کی میونسپل کمشنر کراچی سے منظوری شروع کردی ہے اور اس ٹینڈر کے لئے رقم کو دو کروڑ سے بڑھا کر چار کروڑ تک کردیا گیا ہے ۔