اینٹی تھیفٹ سیل کا پانی چوروں کیخلاف منگھو میں آپریشن

کراچی : ادارہ فراہمی و نکاسی آب کے شعبہ اینٹی تھیفٹ سیل کے انچارج عبدالواحد شیخ کی ٹیم نے ضلع ویسٹ کے علاقے منھگو پیر میں پانی چوروں کے خلاف ایک اور آپریشن کیا ، پانی چوری کا نیٹ ورک ختم کرکے ملزمان کے خلاف پانی چوری ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرا دیا ہے ۔

چیئرمین واٹر بورڈ اور ایم ڈی واٹر کی ہدایات پر کارروائی کرتے ہوئے اینٹی تھیفٹ سیل نے جمعرات کو پولیس کے ہمراہ پانی چوروں کے خلاف آپریشن کیا ، جس میں 4 غیر قانونی ہائیڈرنٹس مسمار کر دیئے ہیں ۔

منگھو پیر تھانے کی حدود میں کیئے گئے آپریشن میں منگھو پیر روڈ گرم چشمہ کے عقب میں ایک اور دوسرا ابراہم مسجد کے سامنے ماربل فیکٹری کے عقب میں، تیسرا ابراھم مسجد کے برابر والی گلی میں اور چوتھا نیو میانوالی پمپنگ اسٹیشن کے عقب میں قائم غیر قانونی ہائیڈرنٹس مسمار کر دیئے گئے ہیں ۔

مذید پڑھیں : چکرا گوٹھ میں DHA کی لائن پر ایک اور ہائیڈرنٹ قائم کر لیا گیا

آپریشن کے بعد پانی چوروں کے خلاف تھانہ منگھو پیر میں مقدمہ نمبر 738/2022 واٹر بورڈ ایکٹ 14A-1B کے تحت درج کرایا گیا ہے جس میں 4 پانی چوروں کو نامزد کیا گیا ہے ،جن کے خلاف پولیس نے مذید تفتیش شروع کر دی ہے ۔

پانی چوروں میں یونس ، عزیز ، عزیز خان اور نزاکت خان سمیت دیگر شامل ہیں ، یہ ملزمان ڈسٹرک ویسٹ کا پانی چوری کر کے ٹینکرز کے ذریعے فروخت کر رہے تھے ۔جنہوں نے واٹر بورڈ کی سرکاری 66 انچ قطر کی لائن سے 3،4 انچ اور 2 انچ کے غیر قانونی کنکشن  حاصل کر رکھے تھے ۔

ان میں ایمل کا بھی کنکشن منقطع کیا گیا ہے جس میں منگھو پیر میں لائنوں کا بھی نیٹ ورک چلا رکھا ہے اور پانی کی مین لائنوں سے کنکشن لیکر پانی چوری کر کے ٹینکروں کے ذریعے پانی فروخت کرتا ہے ۔