چکرا گوٹھ میں DHA کی لائن پر ایک اور ہائیڈرنٹ قائم کر لیا گیا

کراچی : اعلی تحقیقاتی ادارے کے ایک افسر کی مبینہ پارٹنر شپ کے بعد واٹر بورڈ کی ڈیفنس ہائوسنگ اتھارٹی کو جانے والی مین لائن پر ایک اور ہائیڈرنٹ قائم کر لیا ہے جس کو ماشا اللہ ہائیڈرنٹ کی دوسری برانچ کا نام دیا جا رہا ہے ۔

تفصیلات کے مطابق تھانہ زمان کی حدور میں چکرا گوٹھ کے مقام پر ڈیفنس ہائوسنگ اتھارٹی (ڈی ایچ اے ) کو جانے والی پانی کی مین لائن پر ایک اور ہائیڈرنٹ قائم کر لیا گیا ہے ۔ جس کو سرکاری ہائیدرنٹ کے دوسرے یونٹ کا نام دیا گیا ہے ۔

سروے کے مطابق ڈی ایچ اے کی مین لائن پر ایک اور ہاہئیڈرنٹ قائم کر لیا گیا ہے جس کی وجہ سے ڈی ایچ اے کا پانی مذید کم ہو جائے گا اور ڈیفنس ہائوسنگ اتھارٹی کے مکین اپنا ہی پانی مہنگے داموں خرید کر استعمال کریں گے ۔

مزید پڑھیں : اعلی سیاسی شخصیت کے فرنٹ مین علی حسن بروہی کیخلاف منی لانڈرنگ کی ایک اور انکوائری شروع

پیپلز پارٹی کا نام استعمال کر کے ہائیڈرنٹ کھولا گیا ہے جس میں علاقہ مکینوں کو ایک تحقیقاتی ادارے کے ایک افسر کا نام بھی لیکر کہا جاتا ہے وہ ہمارا پارٹنر ہے جس کی وجہ کورنگی چیکو باغیچہ سمیت کورنگی انڈسٹریل ایریا میں طارق خٹک کے لائنوں کے سیٹ اپ کو بھی کوئی ہاتھ نہیں لگاتا ہے ۔

مذکورہ ہائیڈرنٹ میں ماشااللہ ہائیڈرنٹ کے سابق منیجر و پارٹنر نیاز بٹگرامی اور طارق خٹک سمیت تحقیقاتی ادارے کے ایک افسر کا نام دیا جا رہا ہے جو واٹر بورڈ میں افسران سے کروڑوں روپے بھی اینٹھ چکا ہے ۔ جس کی ایک مبیم آڈیو اور ویڈیو بھی لین دین والی بھی بن بن چکی ہے ۔

مذید پڑھیں : گستاخانہ مواد کیس میں FIA افسران کیلئے جسٹس چوہدری عبدالعزیز کے تاریخ ساز ریمارکس

چکرا گوٹھ تھانہ زمان ٹاون کی حدود میں غیر قانونی ہائیڈرنٹ کی جگہ پر بہت بڑا آہنی گیٹ نصب کیا گیا ہے ۔ جہاں کسی بھی دوسرے عام گاڑی کو گزرنے کی اجازت نہیں ہے اور ابتدائی طور پر رات کو ٹینکروں کی سروس دی جا رہی ہے ۔

کراچی کے شہری پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں جب کہ لائنوں کے ذریعے واٹر بورڈ کے مساوی نیٹ ورک چالنے والے اب واٹر بورڈ کی مین لائن سے پانی ٹینکروں کے ذریعے عوام پر ہی فروخت کریں گے ۔

واضح رہے کہ مذکورہ ہائیڈرنٹ قائم کرنے والی مافیا نے گزشتہ دنوں ذرائع ابلاغ میں ایک سرکاری ہائیڈرنٹ کے ٹھیکیدار کے نام اس غیر قانونی ہائیڈرنٹ کو مسنوب کرایا تھا جس کے بعد اب ان کے نام منسوب کر کے خود اس جگہ پر بیٹھ کر ہائیڈرنٹ چلانا شروع کر دیا ہے ۔

مزید پڑھیں : ٹرانس جینڈر ایکٹ 2018 کے پیچھے LGBT کا کیا ایجنڈا ہے ؟

میڈیا سیل پی پی پی ایس 91 کے مطابق ضلع ملیر کے صدر جان عالم جاموٹ کی طرف سے پانی مافیا ، غیر قانونی کنکشن اور ہائیڈرنٹس کے خلاف ایم پی اے ہاؤس ابراہیم حیدری میں کارنر میٹگ کی گئی تھی ، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ ابراہیم حیدری کی عوام نے کہا ہے کہ اگر ہمارے ابراہیم حیدری کے پانی سے کسی نے بھی جائز یا نا جائز کنیکشن لگا کر ہائیڈرنٹس چلانے کی کوشش کی تو ہم جان عالم جاموٹ کی قیادت میں احتجاج کر کے پورا روڈ بلاک کر دینگے ۔

اس موقع پر ابراہیم حیدری کی عوام نے جان عالم جاموٹ کی حمایت کا اعلان کیا اور کہا کہ ہم آپ کی ایک آواز پر حاضر ہیں ۔ میٹنگ میں ابراہیم حیدری کی تمام برادریوں ، پارٹی عہدیداران ، پارٹی ورکرز جیالیوں ، معززین ، نوجوانوں اور لیڈیز نے بڑی تعداد میں شرکت کی تھی ۔

ادھر ایس ایچ او زمان ٹائون رضوان پٹیل نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ ان کے علم میں نہیں ہے کہ کوئی غیر قانونی ہائیڈرنٹ کھلا ہے تو میں اس کے خلاف کارروائی کرنے کا مجاز نہیں ہوں ، اور اس پر کارروائی واٹر بورڈ کرے گا اور وہی ایف آئی آر کروائیں گے ۔ میں اور بھی بہت کرائم دیکھ رہا ہوں ان میں مصروف ہوں ۔ ان کے اس جواب کے بعد ایس ایس پی کا موقف جاننے کے لئے ان کو سوال نامہ بھیج دیا گیا ہے ۔