جامعہ اردو انجمن اساتذہ نے مطالبات کی منظوری کیلئے احتجاج شروع کر دیا

کراچی : انجمن اساتذہ وفاقی اردو یونیورسٹی (عبدالحق کیمپس) کی جانب سے کلاسز کا بائیکاٹ شروع کر دیا گیا ہے ۔اور مطالبات پورے نہ ہونے تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان کیا گیا ہے ۔

انجمن اساتذہ وفاقی اردو یونیورسٹی (عبدالحق کیمپس) کی جانب سے کلاسز کا بائیکاٹ کر کے منفرد احتجاج شروع کر دیا گیا ہے ۔ اساتذہ نے گراونڈ میں بیٹھ کر مطالبات کے حق میں نعرے بازی بھی کی ہے ۔

احتجاج کرنے والے اساتذہ کے مطالبات میں تنخواہوں میں تاخیر , ترقی پانے والے اساتذہ کی فوری پے فکسیشن ,2021ء کے سلیکشن بورڈ میں کامیاب لیکچرار کے تقررناموں کا اجراء , باقی ماندہ شعبوں کے سلیکشن بورڈ کی تکمیل , ہاؤس سیلنگ کے بقایاجات کی ادائیگی , جزو وقتی اساتذہ (صبح و شام) کی گزشتہ ایک سال کی ادائیگی , ریٹائرڈ اساتذہ کے بقایا جات کی فوری ادائیگی جیسے مطالبات شامل ہیں ۔

مذید پڑھیں : 👥 ٹرانس جینڈر ہیں کون؟

دوران احتجاج کلاسز کا مکمل بائیکاٹ کیا گیا ہے اور اساتذہ نے بازؤں پر کالی پٹیاں باندھ کر کیمپس گراؤنڈ میں احتجاجی دھرنا دیا ہوا ہے ۔

اساتذہ نمائندوں کا کہنا ہے کہ مطالبات کی منظوری تک کلاسز کا بائیکاٹ اور احتجاج جاری رہے گا ۔

واضح رہے اس وقت جامعہ اردو میں کوئی بھی مستقل یا عبوری وائس چانسلر نہیں ہے جبکہ اس حوالے سے 15 ستمبر کو اسلام آباد میں چانسلر یعنی صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی کی صدارت میں جامعہ اردو کی سینیٹ کا اجلاس بھی منعقد ہو گا ۔

مذید پڑھیں :کیا میٹرک سسٹم مکمل تبدیل ہو چکا ہے ؟

دریں اثناء انجمن اساتذہ وفاقی اردو یونیورسٹی نے اعلان کیا ہے کہ کل بروز منگل 2202-09-13 کو صبح 10:00 انتظامی عمارت کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا جائے گا ۔ تمام اساتذہ سے گزارش ہے کہ کل صبح 10:00 بجے انتظامی عمارت (admin block) پہنچیں۔