جامعہ کراچی سلیکشن بورڈ کے انعقاد کیلئے علامتی بھوک ہڑتالی کیمپ میں اساتذہ کی گہما گہمی

کراچی : جامعہ کراچی میں سلیکشن بورڈز ایکشن کمیٹی کے زیر اہتمام علامتی بھوک ہڑتال کا آغاز 6 ستمبر کو کر دیا گیا ۔ پہلے روز بھوک ہڑتال پر بیٹھنے والے اساتذہ میں ڈاکٹر ریاض احمد ، ڈاکٹر فیضان نقوی ، ڈاکٹر فرحت حسین ، ڈاکٹر محمد فیض ، ڈاکٹر نیلوفر اور غفران عالم شامل تھے ۔

ایکشن کمیٹی نے اپنے بیان میں کہا تمام اساتذہ ، طلبہ اور ملازمین و میڈیا چینلز و صحافیوں کی شکرگزار ہیں جنہوں نے آج تاریخی بھوک ہڑتال کے آغاز پر نہ صرف اظہار یکجہتی کیا بلکہ اس احتجاج کی تاریخی حیثیت پر بھی روشنی ڈالی اور اپنے تعاون کو جاری رکھنے کا اعادہ کیا ۔

اساتذہ کے بھوک ہڑتالی کیمپ میں یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات سے اساتذہ دن گیارہ بجے سے 2 بجے تک اظہار یکجہتی کے لیے آتے رہے ۔

مذید پڑھیں : جامعہ اردو مالی بحران کیخلاف اساتذہ و غیر تدریسی عمال کا مشترکہ احتجاج

بھوک ہڑتالی کیمپ میں آنے والے اساتذہ میں شعبہ فزکس، اپلائیڈ کیمسٹری، اپلائیڈ فزکس ، کیمسٹری ،مائکروبیالوجی ، بائیو کیمسٹری ، فارمیسی، ریاضی، میرین بیالوجی ، باٹنی ‛ بائیو ٹیکنالوجی ، ہیلوفائٹ، ایجوکیشن ، سندھی ، سوشیالوجی ، لائبریری انفارمیشن ، تاریخ ، اسیس سائنس ، کمپیوٹر سائنس سمیت دیگر شعبہ جات کے اساتذہ شامل تھے ۔

علاوہ ازیں پروگریسو یوتھ الائنس کی زینب سید نے اپنے دیگر طلبہ ، ملازمین اتحاد کے فرحان خان نے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ ، انصاف پسند گروپ کے افتخار الدین ، مشترکہ گروپس کمیٹی کے اشفاق احمد اور وقار علی ساتھیوں کے ہمراہ ، یونائیٹڈ گروپ کے منیر بلوچ نے ساتھیوں سمیت کیمپ کا دورہ کیا اور سلیکشن بورڈ ایکشن کمیٹی کے مطالبہ سلیکشن بورڈز شیڈول کے فوری اجراء کی حمایت کا اعلان کیا ۔

مذید پڑھیں : طلبہ احتجاج کے بعد SZABUL کے امتحانات موخر

جامعہ کراچی کے اساتذہ نے علامتی بھوک ہڑتالی کمیپ بدھ کی صبح 11 بجے سے دوپہر 2 بجے تک سیلیکشن بورڈ کے شیڈول کے اجراء کے لئے اپنے بھر پور جذبے کے ساتھ جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے ۔ بدھ 7 ستمبر کو بھوک ہڑتال پر بیٹھنے والے اساتدہ میں ڈاکٹر محمد سہیل ، ڈاکٹر نائلہ صدیقی ، ڈاکٹر فیض محمد ، ڈاکٹر محمد شاداب اور ڈاکٹر صدف فاطمہ جعفری شامل ہونگے ۔

سلیکشن بورڈز ایکشن کمیٹی نے اپنے تمام ساتھی اساتذہ سے بدھ کو بھی بھوک ہڑتال میں اظہار یکجہتی کی درخواست کی ہے تاکہ ان کی موجودگی سے اساتذہ کی اس تحریک کو آگے بڑھایا جا سکے ۔