سہراب گوٹھ SHO کی سرپرستی میں پرویز گوپانگ نے جوئے کی منڈی سجا لی

سندھ پولیس

کراچی : کراچی کے علاقے  سہراب گوٹھ میں تھانہ سہراب گوٹھ کی حدود ایوب گوٹھ میں بھینسوں کے باڑے کے پاس محمد خان پولیس والے کے پلاٹ پر کراچی کی تاریخ کا سب سے بڑا جوا خانہ آباد ہو گیا ہے ۔

ایس ایچ او سہراب گوٹھ کی سرپرستی میں بد نام زمانہ جوا مافیا پرویز گوپانگ اور آصف لمبے نے ‏سٹہ ، چرخی گھوڑی ، مانگ پتہ اور چھکے کی چاک و چوبند محفل سجا کر ڈی آئی جی ناصر آفتاب کے کرائم فری زون کے خواب کو سائیڈ لائن کر دیا ہے ۔

مزید پڑھیں:جے ایس ایم یو کی جانب سے سجاول میں میڈیکل کیمپ، دوائیں اور راشن تقسیم ، ملیریا اور شوگر کے ٹیسٹ

علاقہ مکینوں کے مطابق قانون کی بالادستی کو عملی جامہ پہنانے والے ہی جرائم پیشہ عناصر کو سازگار ماحول مہیا کرنے لگیں گے ہیں ۔ جرائم پیشہ عناصر کی حوصلہ شکنی اور روک تھام کیسے ہو گی ، اس حوالے سے پولیس بھی خاموش ہے ۔ ایس ایچ او سہراب گوٹھ کی جانب سے جوا مافیا ڈون پرویز گوپانگ اور آصف لمبے کو کھلے عام جوئے کی محفل سجانے کی اجازت دینا شہر قائد میں دہشت گردوں کو آکسیجن پہنچانے کے مترادف ہے ۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ سہراب گوٹھ جیسے علاقے میں ایس ایچ او سہراب گوٹھ کی جانب سے جوا مافیا ڈون پرویز گوپانگ اور آصف لمبے کو جوئے خانے کے لئے محفوظ پناہ گاہ دینا محکمے کے لیے لمحہ فکریہ ہے ۔

عوامی حلقوں کی جانب سے آئی جی سندھ ایڈیشنل آئی جی سندھ ڈی آئی جی اور ایس ایس پی سے یہ پر زور مطالبہ کیا گیا ہے کہ پرویز گوپانگ اور آصف لمبے کے جوئے خانے کو بند کرایا جائے اور ایس ایچ او سہراب گوٹھ کے خلاف فیر انکوائری کروا کر سرپرستی ثابت ہونے پر محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائیں ۔