انجمن اساتذہ کا کمپائنڈ جنرل باڈی اجلاس میں آئندہ کے لائحہ عمل کا فیصلہ

کراچی : جامعہ کراچی میں انجمن اساتذہ جامعہ کراچی کی دعوت پر افسران ، غیر تدریسی عمال کے رہنما و اراکین نے پروفیسر ڈاکٹر شاہ علی القدر، صدر فپواسا چیپٹر سندھ اور صدر انجمن جامعہ کراچی کی زیر صدارت اجلاس میں شرکت کی ۔

اجلاس میں سندھ حکومت کی جانب سے بھیجے گئے مراسلے پر غور کیا گیا ، اس مراسلہ میں سندھ کی تمام پبلک سیکٹر جامعات کو ایڈوانس کیا گیا ہے کہ وہ گریڈ 1 تا 22 کی کنڑیکٹ یا ریگولر تقرری کیلئے، وزیر اعلی سندھ سے پیش اجازت لی جائے ۔

تمام حلقوں نے اس مراسلے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا اور اس عمل کہ شدید مذمت کرتے ہوئے اسے انسانی حقوق اور ذوالفقار بھٹو شہید کے بنائے ہوئے 1973 کے آیئن کے منافی قرار دیا ۔

یہ مراسلہ جامعات کی خود مختاری ایکٹ 1972 کی خلاف ورزی ہے اور جامعات کی اسٹیچوری باڈیز اور شیوخ الجامعات کی توہین کے مترادف ہے ۔

اس سلسلہ میں طے کیا گیا ہے کہ بروز بدھ 7 ستمبر کو آرٹس آڈیٹوریم جامعہ کراچی میں ایک کمبایئنڈ جنرل باڈی کا انعقاد کیا جائے گا ، جس میں جامعہ کراچی کے ملازمین، غیر تدریسی عملہ ، آفیسرز اور اساتذہ کرام شامل ہوں گے ۔

انجمن اساتذہ جامعہ کراچی اور فپواسا سندھ چیپٹر کے ساتھ ملکر آئندہ لائحہ عمل کا اعلان کریں گے ۔ جس میں تمام اسٹیک ہولڈرز اس بات پر متفق ہیں کہ جامعات کی خود مختاری پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا ۔

میڈیا کے ارکان سے التماس ہے کہ وہ اس کمبایئنڈ جنرل باڈی کے بعد تمام اسٹیک ہولڈرز سے ملاقات اور کوریج کیلئے تشریف لائیں ۔