کیوسک کیا ہے ؟

تحریر : عزیز بن عزیز

کیوسک کسی بھی مائع یا سیال کے بہاؤ کو ناپنے کا ایک پیمانہ ہے، عام طور پر دریاؤں اور نہروں کا بہاؤ ناپنے کے لیے استعمال ہوتا ہے، "فی سیکنڈ” 28.3 لیٹر پانی ایک مکعب فٹ.. ایک کیوسک کہلاتا ہے ۔

یعنی اگر ہم اپنے گھر کے باہر دہلیز سے 28.3 لیٹر پانی "فی سیکنڈ” میں بہاتے ہیں تو وہ ایک کیوسک کہلائے گا،، ایک ہزار کیوسک فٹ کا مطلب کسی جگہ سے ایک "سکینڈ” میں 28317 لیٹر پانی گزر رہا ہے، پانچ لاکھ کیوسک ریلے کا مطلب یہ ہوگا کہ وہاں سے ایک "سیکنڈ” میں ایک کروڑ 41 لاکھ 58 ہزار 423 لٹر پانی گزر رہا ہوگا، یہ پڑھتے ہوئے فی سیکنڈ پر دھیان رہے ۔

جنوبی پنجاب اور اندرون سندھ سیلاب سے جس بری طرح متاثر ہوئے ہیں اور انہیں معمول پر لانے کے لیے سرکاری سطح پر جس بےترتیبی سے کام ہورہا ہے جانے کتنے سال لگ جائیں ۔

معروف تفریحی مقام کھینجر جھیل تاریخ میں پہلی بار فل ہو کر چھلک رہا ہے، مجبوراً اسے مختلف جگہوں سے کٹ لگا دیا گیا، پیچھے سکھر بیراج سے رات کو جو پانی گزرتا آرہا ہے وہ 5 لاکھ 60 کیوسک فی”سیکنڈ” گزرنے کا بتایا جارہا ہے ۔

جنوبی پنجاب اور اندرون سندھ میں ہائی وے تو ڈوبی پڑیں ہیں، آمد و رفت میں شدید تر مشکلات کا سامنا ہے، ساتھ اندرون سندھ تو جگہ جگہ ریلوے لائن پانی میں ڈوبی ہوئی ہیں، مذید چار دن ٹرینیں بند رکھنے کا کہہ دیا گیا ۔

سیلاب کے حوالے سے پاکستان تاریخ کے بدترین امتحان سے گزر رہا ہے، صرف سندھ میں 5 سو لوگوں کی جانیں جاچکی، دس لاکھ مکانات صرف اندرون سندھ تباہ ہوچکے، زمینیں فصلیں برباد ہوچکی، اور لاکھوں جانور مر چکے، بچے کچے جانور چارہ نا ہونے کی وجہ سے سسک رہے ہیں ۔

یہ سب بحال ہونے میں تقریباً دو سال کا عرصہ لگ سکتا ہے، جس طرح پاکستان کے سرکاری ادارے اور ان میں اکثریت کام چور حرام لوگوں کی بھرمار بھری پڑی ہے اسے دیکھتے ہوئے چار سال میں یہ تباہ حال علاقے آباد ہوجائیں بہت بڑی بات ہو گی ۔