کے الیکٹرک نے وزیر اعظم کے ریلیف پیکج کو اووربلنگ کے ذریعہ سبوتاژ کر دیا

کراچی : کے الیکٹرک نے وزیر اعظم کے ریلیف پیکج کو اوور بلنگ کے ذریعہ سبوتاژ کر دیا، کراچی کے مختلف علاقوں میں 200 سے کم یونٹس بجلی استعمال کرنے والے صارفین کو 201 یونٹس کے بل بھیج کر وزیر اعظم کی طرف سے دیئے گئے ریلیف سے محروم کر دیا ہے ۔

اگست کے مہینے میں بارشوں کے باعث جن علاقوں میں کے ای تنصیبات زیر آب آجانے کے باعث گھنٹوں بجلی کی سپلائی معطل رہنے کے باوجود صارفین کو بھاری بل بھیج دیے گئے، صارفین نے متعلقہ اداروں کی خاموشی اور کے الیکٹرک کی اووربلنگ کو بدامنی کو ہوا دینے کی سازش قرار دیا ہے۔

کے الیکٹرک نے کراچی کے مختلف زونز لانڈھی، کورنگی، ملیر،گلستان جو ہر سمیت مختلف علاقوں میں 26 تاریخ سے جاری کیے جانے والے اگست کے بجلی بلوں میں 200 یونٹ سے کم بجلی استعمال کرنے والے صارفین کی اووربلنگ کرتے ہوئے 201 یونٹس سے 210 یونٹ کے درمیان بل بھیج دیے ہیں ۔

60 گز اور 40 گز کے چھوٹے فلیٹس اور مکانوں میں رہنے والے چھوٹے صارفین کو 200 یونٹ سے زائد کا بل بھیج کر کے الیکٹرک نے وزیر اعظم کی طرف سے دیے گئے ریلیف پیکیج کو سبوتاژ کرتے ہوئے لاکھوں صارفین کو ایک ماہ کے ریلیف پیکیج سے محروم کر دیا ہے۔

ماہ اگست میں مون سون کی بارشوں کی باعث کے الیکٹرک کی جانب سے کراچی میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 16 گھنٹے سے تجاوز کرنے کے علاوہ کئی علاقوں میں کے ای کی تنصیبات زیر آب آ جانے کے باعث مختلف 36 گھنٹے تک بجلی کی فراہمی سے محروم رہے ہیں ۔

تاہم اس کے باوجود 26 اگست سے جاری کیے جانے والے بجلی کے بلوں میں مبینہ طور پر اوور بلنگ کرتے ہوئے کے الیکٹرک نے رواں سال کے چھ ماہ کے دوران ہر ماہ 150 سے 170 یونٹ کے درمیان بجلی استعمال کرنے والے صارفین پر بجلی گراتے ہوئے 201 یونٹس سے 210 یونٹس بجلی استعمال کے بل بھیج دیے ہیں جب کہ سولر استعمال کرنے والے صارفین جن کا گذشتہ 6 ماہ میں ماہوار 200 یونٹس سے زائد بجلی کا استعمال نہیں ہوا ہے انہیں بھی 200 یونٹس سے زائد کے بل بھیج کر وزیر اعظم کے ریلیف پیکیج سے محروم کر دیا ہے ۔

کے الیکٹرک کورنگی قیوم آباد کے باہر احتجاج کرنے والے صارفین کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک کی اوور بلنگ کے ذریعہ کراچی کے شہریوں سے لوٹ مار پر متعلقہ اداروں کی خاموشی افسوسناک ہے اور کے الیکٹرک کی اوور بلنگ بدامنی کو ہوا دینے کی سازش ہے ۔ صارفین نے وزیر اعظم ،وزیر توانائی سندھ حکومت اور متعلقہ اداروں سے کے الیکٹرک کی من مانی کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے ۔