سائٹ سپر ہائی وے پولیس کی سرپرستی میں کھلے پٹرول کی سر عام فروخت جاری

کراچی : ( رپوٹ/ناظم انصاری ) سائٹ سپر ہائی وے پولیس اسٹیشن کی حدور میں غیر قانونی کُھلا پیٹرول فروخت ہونے لگا ، پولیس کی مبینہ سرپرستی اور تحفظ میں پٹرول فروخت ہونا عام معمول بن گیا ہے ۔

سائیٹ سپر ہائی وے تھانے کی حدود میں غیر قانونی پیٹرول کی مُبینہ فروخت کی نشاندہی کے باوجود جگہ جگہ غیر قانونی کُھلے پٹرول کی بوتلوں میں فروخت جاری ہے ۔ پولیس کی جانب سے نشاندہی کے باوجود کوئی کارروائی نہیں کی جارہی ہے ۔

سائیٹ سُپر ہائی وے تھانے کی حدود میں کُھلے پیٹرول کا کاروبار عروج پر ہونے کی وجہ سے علاقہ مکینوں کو بھی شدید تشویش پائی جا رہی ہے ۔ علامہ مکینوں کا کہنا ہے کہ غیر قانونی طور پر پیٹرول فروخت کرنے کی وجہ سے ان کے بچوں کو بھی جان کے خطرات لاحق ہیں ۔

غیر قانونی پیٹرول کی فروخت کے حوالے سے ذرائع نے بتایا کہ کھلا پیٹرول بھگ سے اڑنے والا خطرناک مادہ ہے ، جو ہوا میں تیزی سے پھیلتا ہے ، جس کی وجہ سے ہر وقت آگ لگنے کا اندیشہ رہتا ہے۔ُکھلے پیٹرول سے عوام کو جانی و مالی نقصان پہنچ سکتا ہے اور بے احتیاطی سے پیٹرول فروخت کرنے کا یہ عمل قابل جرم ہےجس پر مکمل پابندی ہے۔

سیاسی و سماجی حلقوں نے سائیٹ سُپر ہائی وے کی حدود میں میں رہنے والی رہائشی عوام نے کُھلے عام بوتلوں میں پیٹرول فروخت کرنے کے عمل کو روکنے کے ساتھ ساتھ غیر قانونی پیٹرول کی فروخت میں ملوث افراد کے خلاف فوری کاروائی کرنے کا پُرزور مطالبہ بھی کیا ہے ۔

تھانہ سائیٹ سُپر ہائی وے پولیس کی مُجرمانہ غفلت و چشم پوشی کے باعث کُھلے پیٹرول کی فروخت سے کسی بھی وقت کوئی سانحہ رُونُما ہو سکتا ہے جس سے انسانی جانوں کے ضیاع کا اندیشہ ہے علاقہ پولیس فوری کاروائی کرتے ہوئے عوام کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے۔