اسرائیل کی غزہ پر وحشیانہ بمباری، 5 سال کی بچی سمیت 15 فلسطینی شہید

اسرائیل

اسرائیل کی غزہ پر وحشیانہ بمباری سے فلسطینی کمانڈر اور 5 سال کی بچی سمیت 15 فلسطینی شہید اور 75 زخمی ہو گئے۔

جمعے کی دوپہر صیہونی فوج کے جنگی طیاروں نے غزہ، خان یونس اور رفاہ کے علاقوں میں بمباری کی جس سے القدس بریگیڈ کے کمانڈر تاثیر الجباری بھی شہید ہوگئے۔

شہید ہونے والوں میں 23سالہ لڑکی بھی شامل ہے۔ اسرائیل نے غزہ میں بڑے آپریشن کی تیاری کر رکھی ہے۔ 25ہزار ریٹائرڈ فوجی بھی طلب کرلئے گئے ہیں۔

اسرائیلی وزیراعظم یائر لیپڈ نے کہا کہ حملے میں اسلامک جہاد کے کمانڈر تیسیر الجبری  کو نشا نہ بنایا گیا۔

دوسری جانب اسلامک جہاد نے اسرائیلی فضائی حملے کو اعلان جنگ قرار دیا۔ اور جوابی کارروائی میں اسرائیل پر 100 سے زائد راکٹ فائر کیے۔

فلسطینی کی مزاحمتی تنظیم حماس نے بھی اپنے بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل نئے جرم کا مرتکب ہوا ہے، اسے اس کی قیمت چکانی پڑے گی۔

یہ بھی پڑھیں: اسرائیل نے ایک بار پھر رمضان میں غزہ پر بم برسانا شروع کر دیئے

وزیراعظم شہباز شریف نے  سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں اس واقعے کو اسرائیل کی دہشت گردی کی تازہ ترین کارروائی قرار دیا۔

شہباز شریف نے کہا کہ اگر سزا کے خوف سے بالاتر ہو کر ظلم کرنے والے کا کوئی وجود ہے تو وہ اسرائیل ہے جو نتائج کی پرواہ کئے بغیر فلسطینیوں کو نشانہ بنا رہا ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *