SMIU ملازمین کو سیلنگ الائونس سمیت ٹائم اسکیل دیا جائے، سندھ یونیورسٹیز آفیسرز فیڈریشن

کراچی : سندھ کی تمام جامعات کے آفیسرز پر مشتمل مشترکہ ایسوسی ایشن سندھ یونیورسٹیز آفیسرز فیڈریشن کے وفد نے سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی آفیسرز ایسوسی ایشن (سموا) کے اجلاس میں شرکت کی۔

جس میں سوف کے جنرل سیکریٹری انجینئر دانش خان، دائود انجنیئرنگ یونیورسٹی آفیسرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری مصری چانہیو اور سیکریٹری اطلاعات سرفراز علی جونیجو،سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی ایمپلائز ویلفئر ایسو سی ایشن کے صدر بلاول مہر اور جامعہ کے افسران نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

مزید پڑھیں:جامعہ این ای ڈی کے زیرِ اہتمام ”یومِ امامِ حسین” کا انعقاد

ہاؤس رینٹل سیلنگ، پروموشن، اپگریڈیشن اور دیگر جائز مطالبات کے حصول کے لئے سموا نے اجلاس ترتیب دیا، سوف کے جنرل سیکریٹری انجینئر دانش خان نے شرکا ء‎سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آفیسرز کی جانب سے جو جائز حقوق مانگے جارہے ہیں وہ باقی دیگر جامعات بھی دے رہی ہیں اس لیے صرف ایک جامعہ کی جانب سے ملازمین کے حقوق کی پامالی کرنا افسوس کے مترادف ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک تو ملازمین کے جائز حقوق غضب کیے جارہے ہیں اوپر سے ان کو خاموش کرانے کیلئے ان پر ناجائز طریقوں سے دبائو ڈال کر ان کو حراساں کیا جارہا ہے کہ وہ اپنے حقوق سے دستبردار ہوجائیں، انتظامیہ سے گزارش کرتے ہیں مہنگائی کے اس دور میں جلد سے جلد سندھ مدرستہ کے ملازمین کو ہاؤس سیلنگ اور ٹائم اسکیل فوری دیا جائے۔

اس موقع پر دائود انجنیئرنگ یونیورسٹی آفیسرز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری مصری چانہیونے بھی خطاب کیا اور اپنی طرف سے سموا کے اراکین کو مکمل حمایت کا یقین دلایا۔ انہوں نے ملازمین کو انتقامی کارروائیوں کا نشانہ بنانے کی سخت الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ اپنے حقوق کیلئے بات کرنا نہ صرف ہر ملازم بلکہ ہر شہری کا بنیادی حق ہے جس کی اجازت اس کو آئین پاکستان دیتا ہے۔ لہذا انکو جبری طریقے سے روکنا آئین اور قانون کی خلاف ورزی ہے۔

مزید پڑھیں:پی سی ایم ڈی جرنل کلب کے تحت جامعہ کراچی میں سیمینار

سموا کے صدر مشتاق گوپانک نے مرکزی فیڈریشن اور دیگر جامعات کی ایسوسی ایشنز کے سربراہان کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے ایس ایم آئی یو کا دورہ کیا تمام ملازمین کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا۔ انہوں نے کہا ہم جائز مطالبے کیلئے آواز بلند کررہے ہیں اور ہمارے مطالبات وہ ہیں جو دیگر جامعات برسوں سے اپنے ملازمین کو دے رہی ہیں۔

ملازمین کی بڑی تعداد گذشتہ کئی برسوں سے ہاؤس سیلنگ، پروموشن اور ٹائیم اسکیل نہ ملنے کی وجہ سے مایوسی کا شکار ہیں اگر کوئی اپنے حق کے لئے بات کرتا ہے تو اسے انتقامی کارروائیوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔

انتظامیہ کو چاہیے کہ ملازمین کو ان کے جائز حقوق دیے جائیں کیونکہ یہ ادارہ انہی ملازمین کی محنت اور کاوشوں کی وجہ سے آج ترقی کی منزل کی جانب گامزن ہے۔

مزید پڑھیں:وائٹ ہاؤس کے قریب آسمانی بجلی گرنے سے 4 افراد زخمی

اس موقع پر سندھ مدرستہ الاسلام یونیورسٹی ایمپلائیز ایسوسی ایشن کے صدر بلاول مہر نے بھی خطاب کیا اورکہا کہ تمام ملازمین کو سیلنگ الائونس فی الفور دیا جائے اور تمام ملازمین کی نظریں انتظامیہ کی طرف ہیں۔

مہنگائی کے اس دور میں قائد اعظم کی مادرِ علمی کے ملازمین کی تنخواہیں دیگر تمام جامعات سے بہت کم ہے جس کی وجہ سے یہاں کا نچلے گریڈ کا ملازم سب سے زیادہ پریشانیوں کا شکار ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *