الیکشن کمشنر کیخلاف سپریم جوڈیشل کونسل جائیں گے، عمران خان

عمران خان نااہلی کیس

سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ چیف الیکشن کمشنر کے خلاف جوڈیشل کونسل جائیں گے، ممنوعہ فنڈنگ کے فیصلے جیسی احمقانہ رپورٹ نہیں دیکھی۔

نجی ٹی وی کو انٹریو دیتے ہوئے چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے کہا کہ ہمیں نومبر کو سوچنے کے بجائے ابھی کا سوچنا چاہیے کیونکہ حالات بہت خراب ہیں، ٹیکسٹائل کی فیکٹریاں بند ہورہی ہیں، توانائی کا شدید بحران ہے جس کی وجہ سے لوگوں کے روزگار بند ہورہے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ ’حکومت الیکشن کی تاریخ کا اعلان کردے پھر ہم بیٹھ کر بات کرنے کے لیے بھی تیار ہیں مگر ن لیگ، پی پی کے ذہن میں بس ایک بات ہے کہ یہ کسی بھی طرح پی ٹی آئی کو کھیل سے باہر کردیں مگر یہ کامیاب نہیں ہوں گے کیونکہ عوام ہمارے ساتھ ہیں‘۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ الیکشن کمیشن حکومت کے ساتھ سازش میں ملوث ہے، پی پی اور ن لیگ نے بڑے بڑے سیٹھ پالے ہوئے ہیں جن سے یہ پیسے لیتے ہیں اور پھر اس کو الیکشن میں استعمال کرتے ہیں۔

سابق وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ ’الیکشن کمیشن نے ہمیں فارن فنڈڈ کہہ کر ہماری توہین کی ہے، بیرونِ ملک سے پیسہ جمع کرنے میں کوئی ممانعت نہیں جبکہ 2017ء کے بعد غیر ملکی کمپنیوں سے فنڈ نہ لینے کا قانون منظور ہوا اور ہماری 2012ء کی ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمشنر کی سلیکشن پر لوگوں نے شور مچایا تھا یہ ن لیگ کا آدمی ہے، ہم الیکشن کمشنر کے خلاف سپریم جوڈیشنل کونسل میں جائیں گے اور کل الیکشن کمیشن کے باہر پُرامن احتجاج بھی کریں گے۔

عمران خان نے یقین دہانی کرائی کہ ہم ریڈ زون میں داخل نہیں ہوں گے بس الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر جمع ہوکر پُرامن احتجاج کریں گے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *