ادویاتی پودا ‘جدوار’ ابتدائی زمانے سے علاج معالجے میں استعال ہوتا آیا ہے، انیلابشیر

کراچی:۔ایچ ای جے ریسرچ انسٹی ٹیوٹ آف کیمسٹری، جامعہ کراچی کی پی ایچ ڈی اسکالر انیلا بشیر نے بدھ کو بین الاقوامی مرکز برائے کیمیائی و حیاتیاتی علوم (آئی سی سی بی ایس)، جامعہ کراچی میں منعقدہ ایک سیمینار میں اپنے تحقیقی مقالے کے دفاع میں گفتگو کی۔

گفتگو کے دوران ان کا کہنا ہے کہ ’ جدوار‘ ایک ادویاتی پودا ہے کہ جو ابتدائی زمانے سے انسانی علاج معالجے میں استعال ہوتا آیا ہے۔

مزید پڑھیں:کراچی میں سمندر پر نہانے سمیت غوطہ خوری اور تیراکی پر پابندی عائد

واضح رہے کہ انیلابشیرایچ ای جے ریسرچ انسٹی ٹیوٹ میں پروفیسر ڈاکٹر فرزانہ شاہین کی زیرِ نگرانی پی ایچ ڈی کررہی ہیں۔

انیلابشیر نے کہا کہ جدوارہمیشہ سے ہربل دوا کے طور پر استعمال ہوتا آیا ہے یہ پودازہر کے تریاق، قوت بخش دوا، مقوی قلب اور بخار کم کرنے والی دوا کے طور پر استعمال ہوتا رہاہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کا مقالہ دو حصوں پر مشتمل ہے۔ سمینار کے آخر میں سوالات و جوابات کا سیشن بھی ہوا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *