کراچی: نوجوان کا قتل، ملزم کے ویڈیو بیان پر بندھانی برادری کے صدر کا ردِعمل

عبدالوحید چوہان

کراچی میں بہن کی شادی میں بھائی کے قتل کے ملزم نے ویڈیو پیغام جاری کیا جس پر مقتول حماد کی بندھانی برداری کے صدر کا ردِ عمل بھی سامنے آگیا۔ 

صدر عبدالوحید چوہان نے ملزم ذیشان کی جانب سے سوشل میڈیا پر وائرل کیے جانے والے ویڈیو بیان کو حقائق مسخ کرنے کی گھناؤنی سازش قرار دیا۔

اپنے آڈیو بیان میں عبدالوحید چوہان نے قانون نافذ کرنے والے اداروں سے سوال کیا کہ ایک قتل کے الزام میں مطلوب شخص کس طرح اپنی ویڈیو وائرل کرسکتا ہے؟

انہوں نے کہا کہ ہم اعلیٰ پولیس حکام اپیل کرتے ہیں کہ جو احترام آپ کو دیا گیا اور یقین دہانی پر احتجاج ختم کیا گیا، اس کے تناظر میں اس ملزم کو فوری طور پر گرفتار کیا جائے۔

ساتھ میں عبدالوحید چوہان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہم قانون ہاتھ میں نہیں لیں گے اور ملزم کو قانون کے دائرے میں رہ کر کیفر کردار تک پہنچائیں گے۔

صدر نے کہا کہ ملزم اپنی گرفتاری سے بچنے کے لیے اور ویڈیو بنا کر ضمانت لینے کی خاطر یہ سب کچھ کر رہا ہے، اگر اسے اپنا بیان ہی ریکارڈ کروانا ہے تو پہلے گرفتاری دے اور عدالت میں اپنا بیان ریکارڈ کروائے۔

ساتھ میں انہوں نے یہ بھی واضح کیا کہ ہمارے پاس ملزم کے خلاف کافی ثبوت موجود ہیں اور ہم عدالت میں وہ تمام ثبوت و شواہد پیش کریں گے۔

خیال رہے کہ کراچی کے علاقے لیاقت آباد کی بندھانی کالونی میں چند روز قبل ایک نوجوان کو اپنی بہن کی شادی کے دوران ہال کے باہر معمولی سی تلخ کلامی پر قتل کردیا گیا تھا۔

قتل کرنے والے کا نام ذیشان قریشی بتایا جاتا ہے کہ جو واقعے کے بعد سے مفرور ہے اور پولیس اسے پکڑنے کے لیے چھاپے مار رہی ہے۔

ملزم نے واقعے سے متعلق ایک ویڈیو پیغام بھی سوشل میڈیا پر جاری کیا تھا جس میں اس کا کہنا تھا کہ جاں بحق ہونے والے نوجوان نے اس سے اور اس کی اہلیہ سے بدتمیزی کی تھی۔

اس ملزم کا یہ بھی کہنا تھا کہ مقتول اس کی بندوق چھیننے کی کوشش کر رہا تھا جبکہ وہ ہوائی فائرنگ کرنے کی کوشش کر رہا تھا اور اسی دوران بندھانی برادری کا نوجوان جاں بحق ہوا۔

دوسری جانب عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ جب مقتول حماد ذیشان کی گاڑی کی جانب بڑھ رہا تھا تو اس وقت اس نے گاڑی میں بیٹھے بیٹھے ہی پیشہ ورانہ قاتل کی طرح فارنگ کرکے اسے ہلاک کردیا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *