حمزہ شہباز 3 ووٹوں کی برتری سے وزیراعلیٰ پنجاب برقرار

حمزہ شہباز پنجاب کے وزیراعلیٰ منتخب ہوگئے، ڈپٹی اسپیکر دوست مزاری نے نتیجے کا اعلان کرنے سے پہلے چوہدری شجاعت کا خط ایوان میں دکھاتے ہوئے ق لیگ کے دس ووٹ منسوخ کردیے، جس کے بعد پرویز الہٰی کے ووٹوں کی تعداد 176 جبکہ حمزہ شہباز کے ووٹوں کی تعداد 179 ہوگئی ہے۔

اراکین پنجاب اسمبلی کی جانب سے وزیر اعلیٰ پنجاب کے انتخاب کے لیے ووٹنگ کا عمل مکمل ہونے کے بعد ایوان میں گنتی شروع ہوئی۔

مزید پڑھیں:چوہدری شجاعت کا خط ڈپٹی اسپیکر کو موصول، ذرائع

اس سے قبل پنجاب اسمبلی کی لابیز کو بند کر دیا گیا تھا، جس کے بعد ایوان میں قائد ایوان کے انتخاب کا عمل شروع کیا گیا۔

ڈپٹی اسپیکر دوست مزاری نے اجلاس کی صدارت کی، ن لیگ کے اراکین اسمبلی ہال میں پہنچے ، جس کے بعد اسمبلی کے دروازے بند کردیے گئے تھے۔

مسلم لیگ (ن) کے نو منتخب رکن پنجاب اسمبلی راجہ صغیر نے حلف اٹھالیا۔

مزید پڑھیں:ق لیگ ایوان کے اندر شش و پنچ کا شکار

پاکستان مسلم لیگ (ق) کے ارکان پنجاب اسمبلی شش و پنج کا شکار نظر آئے، تاہم بعد میں پرویزالہٰی سمیت 10ارکان نے ووٹ کاسٹ کیا، ووٹ ڈالنے والوں میں شجاعت نواز، عمار یاسر، پرویز الہٰی، خدیجہ عمر، ساجد بھٹی شامل ہیں۔

ق لیگ کے ارکان اسمبلی نے اپوزیشن کے امیدوار پرویز الہٰی کو ووٹ دیا۔

پی ٹی آئی کے نو منتخب اراکین زین قریشی اور شبیر گجر پر (ن) لیگ نے اعتراض اٹھا دیا، مسلم لیگ (ن) کے خلیل طاہر سندھو نے پوائنٹ آف آرڈر پر اعتراض اٹھایا۔

ڈپٹی اسپیکر دوست محمد مزاری نے زین قریشی کے حق میں رولنگ دی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *