امریکی ڈرون حملے میں شام میں داعش کا اہم سربراہ جاں بحق

شام میں داعش کا رہ نما ماہرالعقال امریکی فوج کے فضائی حملے میں مارا گیا ہے۔ وہ داعش گروہ کے سرفہرست پانچ رہ نماؤں میں سے ایک تھا ـ

امریکا کی مرکزی کمان اور محکمہ دفاع (پینٹاگان) نے منگل کے روز الگ الگ بیان میں کہا ہے کہ شام کے شمال مغربی علاقے عفرین میں ڈرون حملے میں ماہرالعقال مارا گیا ہے اور اس کا ایک قریبی ساتھی شدید زخمی ہوا ہے۔

مزید پڑھیں:نیوٹرلز سے صلح کرنا چاہتا ہوں، شیخ رشید احمد

وہ دونوں اس وقت موٹرکار پرکہیں جارہے تھے اور انہیں میزائل حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے ـ

بیان کے مطابق اس آپریشن پر کامیاب عمل درآمد کو یقینی بنانے کے لیے جامع منصوبہ بندی کی گئی تھی۔ ابتدائی جائزے سے پتا چلتاہے کہ حملے میں کوئی عام شہری ہلاک نہیں ہوا ہے ـ

بیان میں کہا گیا ہے کہ ماہرالعقال عراق اور شام سے باہر داعش کے نیٹ ورک کو تیار کرنے کا ذمہ دارتھا ـ

مزید پڑھیں:کورونا وبا خاتمےکے قریب نہیں: عالمی ادارہ صحت

عسکری تجزیہ نگاروں کے مطابق ان کی موت شام میں وسیع علاقہ کھونے کے بعد داعش کو دوبارہ منظم کرنے کی کوششوں کے لیے ایک اور دھچکاثابت ہوگی ـ

یادرہے کہ فروری میں شام میں امریکی فوج کے حملے کے دوران داعش کے ایک سرکردہ رہ نما نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا تھا ـ

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *