پنجاب اور بلوچستان میں مزید موسلادھار بارشوں کی پیشگوئی

پنجاب اور بلوچستان میں 5 سے 7 جولائی کے دوران تیز ہواؤں اور گرج چمک کے ساتھ مزید بارشوں کا امکان ہے جس کے باعث نشیبی علاقے زیر آب آنے اور ندی نالوں میں طغیانی کا خدشہ ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق فیصل آباد، لاہور، گوجرانوالہ اور سیالکوٹ سمیت پنجاب کے مختلف علاقوں میں موسلادھار بارش کا امکان ہے اور حالیہ بارشوں سے راولپنڈی، اسلام آباد، کشمیر، خضدار، گوادر اور آواران کے ندی نالوں میں طغیانی کا خدشہ ہے۔

محکمہ موسمیات نے تمام متعلقہ اداروں کو الرٹ رہنے کی ہدایت کرتے ہوئے خبردار کیا کہ آزاد کشمیر، گلیات، مری، چلاس، دیامر، گلگت، ہنزہ، استور اور اسکردو میں لینڈ سلائیڈنگ کا خدشہ ہے لہذا مسافر اور سیاح اس دوران غیر ضروری سفر سے گریز کریں۔

محکمہ موسمیات کا کہنا تھا کہ مون سون ہوائیں آئندہ 24 گھنٹوں میں شدت سے بیشتر علاقوں میں داخل ہوں گی اور رواں ہفتے کے آخر سے مون سون ہواؤں میں دوبارہ شدت کا امکان ہے۔

پی ڈی ایم اے نے کہا کہ پنجاب کے مختلف شہروں میں موسلادھار بارشوں کی وجہ سے نشیبی علاقے زیر آب آنے کا خطرہ ہے، بارشوں کے باعث راولپنڈی کے مقامی ندی نالوں میں طغیانی کا بھی خدشہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسافر اور سیاح اس دوران غیر ضروری سفر سے گریز کریں، پی ڈی ایم اے نے کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لیے تمام متعلقہ اداروں کو ہائی الرٹ رہنے کی ہدایت کردی ہے۔

دوسری جانب جڑواں شہروں میں موسلادھار بارش سے نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہونے سے املاک کو شدید نقصان پہنچا جب کہ نالہ لئی میں پانی کی سطح 18 فٹ بلند ہونے سے نشیبی علاقوں میں پانی داخل ہوگیا۔

ہنگامی حالات سے نمٹنے کے لیے فوجی دستے کشتیوں سمیت نالہ لئی کے قریب علاقوں میں پہنچے۔ ریسکیو 1122، سول ڈیفنس اور واسا سمیت تمام ادارے بھی ہائی الرٹ ہیں۔

ادھر اسلام آباد کے علاقے ترنول، آئی جے پی روڈ، ایکسپریس ہائی وے اور موٹروے چوک پر پانی جمع ہونے سے مسسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔

واسا حکام کا کہنا تھا کہ نشیبی علاقوں میں ہیوی مشینری کی مدد سے پانی نکالا جا رہا ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *