مہنگائی کی شرح 21.3 فیصد کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئی

پی ٹی آئی

مہنگائی  کی نئی لہر نے غریب عوام کی کمر توڑ دی اور نئی شرح 21.3 فیصد کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی ادارہ شماریات نے تازہ ترین اعدادوشمار جاری کر دیئے جس میں بتایا گیا کہ مہنگائی نے ملک بھر میں نیا ریکارڈ قائم کردیا ہے اور مہنگائی کی شرح 21.3 فیصد کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گئی ہے۔

اعدادو شمار کے مطابق گزشتہ سال کے مقابلے میں مہنگائی میں 13.8 فیصد کا اضافہ ہوا ، شہری علاقوں میں مہنگائی کی شرح میں 19.8 فیصد دیکھا گیا جب کہ دیہی علاقوں میں مہنگائی کی شرح میں 23.6 فیصد اضافہ ہوا۔

ادارہ شماریات کی جانب سے جاری کی گئی تفصیلات میں بتایا گیا کہ گزشتہ ایک سال کے دوران  سب سے زیادہ پیاز کی قیمت میں 175 فیصد اضافہ دیکھنے میں آیا ، ٹماٹر کی قیمت میں  149 فیصد اور خوردنی تیل وگھی کی قیمت میں 88 فیصد اضافہ ہوا۔

اس دوران دال مسور 74 فیصد ، چنے 65، پھل 41 اور چکن 34 فیصد مہنگا ہوا جب کہ گندم کی قیمت میں 30 فیصد ، سبزیاں 27، دال چنا کی قیمت میں 27 فیصد اضا فہ ہوا۔

رپورٹ میں مزید بتایا گیا کہ پیٹرول کی قیمت 99.44 فیصد اور بجلی کے چارجز 35 فیصد جب کہ لیکوڈ ہائیڈرو کاربن 63 فیصد مہنگے ہوئے۔ ایک سال میں دال مونگ 15 فیصد ، چینی 10 فیصد اور گڑ ایک فیصد سستا ہوا۔

واضح رہے کہ مسلم لیگ (ن) کی مخلوط حکومت نے گزشتہ روز پیٹرول کی قیمت میں چوتھی بار اضافہ کیا جس سے پیٹرول کی فی لیٹر قیمت اب 248 روپے 74 پیسے ہوگئی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *