چمپئینز ٹرافی 2025 کی میزبانی چھیننے کی کوشش کی گئی، رمیز راجہ

رمیز راجہ

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین رمیز راجہ نے دعویٰ کیا ہے کہ چمپئینز ٹرافی 2025 کی میزبانی پاکستان سے واپس لینے کی کوشش کی گئی۔

تفصیلات کے مطابق رمیز راجہ کا کہنا تھا کہ آئی سی سی فل ممبر کے دباؤ کی وجہ سے 2025 کی چیمپئنز ٹرافی کی میزبانی کے حقوق پاکستان کو دیے گئے ہیں۔

کراچی میں ایک پریس کانفرنس میں رمیز راجہ نے بتایا کہ گزشتہ سال نیوزی لینڈ کی پاکستان میں سیریز کھیلنے سے اچانک اور غیر متوقع منسوخی کے بعد آئی سی سی پر رمیز راجہ کی جانب سے دباؤ تھا اور وہ فیصلہ پاکستان کے حق میں کرانے میں کردار ادا کر سکتا تھا۔

واضح رہے کہ 2021  کے آخر میں، آئی سی سی نے پاکستان کو 2025 کی چیمپئنز ٹرافی کے میزبان کے طور پر ظاہر کیا۔

اس کے بعد انگلینڈ اور نیوزی لینڈ نے دونوں بورڈز کے اعلیٰ افسران کے درمیان بات چیت کے بعد اس سال کے آخر میں دورہ کرنے کا وعدہ کیا۔

پی سی بی کے چیئرمین رمیز راجہ نے نیشنل اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ جب نیوزی لینڈ اور انگلینڈ نے اپنے دورے منسوخ کیے تو آئی سی سی دباؤ میں تھی۔

اور جب دباؤ پیدا ہوا تو ہمیں چیمپئنز ٹرافی ملی، جس کا مطلب ہے کہ آئی سی سی نے تسلیم کیا کہ پاکستان کے ساتھ غلط سلوک کیا گیا.

نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے مبینہ طور پر پی سی بی کو دورہ منسوخ کرنے کے معاوضے کے طور پر رقم ادا کرنے پر رضامندی ظاہر کی۔

نیوزی لینڈ کی ٹیم دسمبر میں دو ٹیسٹ اور پانچ ایک روزہ بین الاقوامی میچوں اور اپریل 2023 میں زیادہ سے زیادہ ٹی ٹوئنٹی کے لیے پاکستان کا دورہ کرے گی جب کہ انگلینڈ ستمبر میں سات ٹی ٹوئنٹی میچوں کے لیے دورہ کرے گا اور پاکستان کو حالات سے ہم آہنگ ہونے کا موقع ملے گا.

علاوہ ازیں بنگلہ دیش اور نیوزی لینڈ پر مشتمل ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ سے عین قبل سہ ملکی سیریز کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔

رمیز راجہ نے مزید کہا کہ میچوں کی اضافی تعداد بھی پچھلے سال فکسچر کے نقصان کا معاوضہ ہے۔ چیئرمین نے یقین دلایا کہ پی سی بی، ای سی بی، این زیڈ سی اور آئی سی سی کے درمیان تعلقات اچھے ہیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *