کراچی سے بکرے کا نایاب بچہ دریافت

تحریر: سید ثاقب شاہ

کراچی میں اپنے کانوں کی وجہ سے منفرد خصوصیت کا حامل بچہ دریافت, جس کے کانوں کی لمبائی 48 سینٹی میٹر ہے۔ یعنی تقریباً ڈیڑھ فٹ ہے جو کہ مکمنہ طور پر ورلڈ ریکارڈ ہو سکتا ہے ۔جسکا نام اس کے مالک نے سمبا رکھا ہے۔

سمبا بکروں کی نایاب نسل لہڑی سے تعلق رکھتا ہے جو کہ دودھ دینے والی نسل ہے۔ پیدائش کے وقت اسکے کانوں کی لمبائی 48 سینٹی میٹر تھی ۔ اس سے پہلے یہ ریکارڈ حجازی نسل کے بکرے کے کانوں کی زیادہ سے زیادہ لمبائی 43 سینٹی میٹر نوٹ کی گئی تھی۔ جبکہ سمبا کے کانوں کی لمبائی 48 سینٹی میٹر ہے جو کہ مکمنہ طور پر ورلڈ ریکارڈ ریکارڈ ہوسکتا ہے۔

مزید پڑھیں: ذوالحج کا چاند نظر نہیں آیا، عید الاضحیٰ 10 جولائی کو ہو گی

سمبا کی صفائی اور دیکھ بھال پر ایک ملازم مامور ہے جبکہ اسے رکھنے کے لیے خاص پنچرہ بنایا گیا ہے۔ سمبا کے سونے کے لیے ایک بستر بھی تیار کیا گیا ہے۔ دن میں 3دفعہ اسے بکری کادودھ پلایاجاتاہے۔ اس کا رنگ براؤن ہےاور کان سفید ہیں۔

اس کے لمبے کان اور اسکا رنگ اسکی خوبصورتی اور انفرادیت ہے۔ اس کے کانوں کی خصوصی دیکھ بھال کی جاتی ہے۔ اسکے کانوں کو خاص طریقے سے باندھا جاتا ہے تاکہ کانوں کو زخمی ہونے سے بچایا جا سکے۔ جس کے لیے اس کے کان گردن پر لٹکائے جاتے ہیں ۔

ننھے سے سمبا کے کان اتنے لمبے ہیں کہ جب وہ کھڑا ہوتا ہے تو اس کے کان اسکے پاؤ کو چھو رہے ہوتے ہیں۔ اس منفرد خصوصیت کی وجہ سے سوشل میڈیا پر سمبا مرکز نگاہ بنا ہوا ہے۔

مزید پڑھیں: کھیل پر توجہ دیکر ٹیم میں کم بیک کریں، رمیز کا احمد شہزاد کو مشورہ

سمبا کے مالک حسن ناریجو کا کہتے ہے کہ میں پاکستان کے سمبا کا نام گینیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں درج کرانا چاہتا ہوں۔ اس حوالے سے متعلقہ لوگوں سے رابطے میں ہوں۔ مجھے پاکستان بھر اور پاکستان سے باہر بھی سمبا کے بیچنے کی آفر آئی ہے۔ دوتین پیشکشیں سعودیہ اورعمان سےآئی جبکہ 4،5پیشکشیں پاکستان سےآئی ہے۔ جسے میں نے رد کردیا ہے ۔ میرا پہلا مقصد پاکستان کے لیے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں سمبا کا نام درج کرانا ہے۔ حال ہی میں پنجاب میں سمبا کو آل پاکستان بیوٹی چیمپئن کا ایوارڈ بھی ملا ہے۔

حسن کا مزید کہنا تھا کہ میں گوٹ فارمنگ کے شعبے کو پاکستان میں پروموٹ کرنا چاہتا ہوں۔ اس شعبے سے ایک عرصے سے وابستہ ہوں۔

مزید پڑھیں:نئی ٹی ٹوئنٹی رینکنگ جاری،بابر اعظم کی پہلے نمبر پر حکمرانی برقرار

پاکستان کی معیشت کوبہتر کرنے کیلئے بکری کی فارمنگ پرکام کر رہا ہوں۔ دراصل یہ دودھ پیدا کرنے والی نسل ہے۔ جس سے پاکستان کو مالی فوائد ملے گے۔ پاکستان ایسا ملک ہے جہاں 20 سے زائد قسم کی بکریوں کی نسل پائی جاتی ہے۔ گوٹ فارمنگ کے شعبے پر کام کیا جائے تو یہ ایک منافع بخش کاروبار ہے۔ میں نے یوٹیوب پرایک چینل "ناریجوگوٹ فارم” کے نام سے بنایا ہے ۔

جہاں میں مختلف قسم کی بکریوں کی نسل کی عادتیں،کھانا پینا،لائف اسٹائل ساری چیزیں پیش کرتاہوں۔ میرا مقصد ہے کہ گوٹ فارمنگ کے شعبے کو عالمی سطح کا بناکر پاکستان کا نام روشن کرسکوں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *