ایل پی جی کی قیمت میں ایک دن میں دوسری بار اضافہ

ایل پی جی کی قیمت میں بڑی کمی

ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں نے سپر ٹیکس کی آڑ میں 24 گھنٹوں کے دوران فی کلو ایل پی جی کی قیمت مزید 10روپے کا اضافہ کردیا۔

وفاقی حکومت کی جانب سے فی ٹن ایل پی جی پر سپر ٹیکس عائد ہونے کو جواز بناکر بے لگام مافیا نے عیدالاضحیٰ کے موقع کا بھرپور فائدہ اٹھانے کے لیے ایل پی جی کی مصنوعی قلت پیدا کردی۔

عالمی مارکیٹ میں ایل پی جی کی قیمتوں میں کمی کے باوجود فی کلوگرام ایل پی جی کی قیمت میں 24 گھنٹوں کے دوران دوسری بار 10 روپے کا اضافہ کردیا جس سے ایک دن کے دوران ایل پی جی کی فی کلو قیمت میں یکدم 20 روپے کا اضافہ ہوگیا۔

ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین عرفان کھوکھر نے کہا کہ ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں نے سپر ٹیکس کی آڑ میں مزید قیمتیں بڑھانے کے لیے گھٹ جوڑ کر لیا ہے اور ایل پی جی کی ذخیرہ اندوزی شروع کر دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ یکم جولائی 2022 سے انٹر نیشنل مارکیٹ میں ایل پی جی کی قیمت میں کمی ہو رہی ہے لیکن مقامی سطح پر قیمتیں بڑھائی جا رہی ہیں ، ایل پی جی کی قیمت میں مزید 10روپے فی کلو اضافہ بلاجواز ہے۔

عرفان کھوکر نے وزیراعظم شہباز شریف سے مطالبہ کیا کہ اوگرا کی مقرر کردہ قیمت سے زیادہ قیمت وصول کرنے والوں کے خلاف سخت اقدام کیا جائے جب کہ وزیراعظم اور چیئرمین اوگرا مافیا کے خلاف فوری نوٹس لیں۔

چیئرمین ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ 24 گھںٹوں کےدوران 20 روپے اضافے کے بعد فی کلو ایل پی جی کی قیمت بڑھ کر 220 روپے فی کلو ہوگئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ گھریلوں سیلنڈر کی قیمت 106روپے فی کلو کے اضافے سے 2581 روپے اور کمرشل سیلنڈر کی قیمت 408روپے فی کلو کے اضافے سے  9988 روپے ہوگئی جب کہ گلگت بلتستان میں فی کلو ایل پی جی کی قیمت 270 روپے تک پہنچ گئی۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *