سندھ بھر میں 56 ہزار اساتذہ کی بھرتی کا عمل مکمل

سندھ بھر میں 56 ہزار اساتذہ کی بھرتی کا عمل مکمل

کراچی: سید سردار علی شاہ کا کہنا ہے کہ یکم اگست سے وہ تمام اسکولز کھل جائینگے جو صرف استاد نہ ہونے کی وجہ سے بند تھے۔ 50 ہزار کے قریب اساتذہ کی بھرتیاں خالصتاً میرٹ کی بنیاد پر کی ہیں۔

ان کا مذید کہنا ہے کہ 9 لاکھ بچوں کو یکم اگست سے پہلے فرنیچر فراہم ہو چکا ہو گا۔ حالیہ بھرتیوں میں جونیئر اسکول ٹیچرز کی تعداد 17 ہزار 355 اور پرائمری اسکول ٹیچرز کی تعداد 38 ہزار 699 ہے۔ کل 56 ہزار 54 اساتذہ بھرتی کیئے گئے ہیں۔

انڈکشن ٹریننگ کیلئے سبجیکٹ اسپیشلسٹ (Internee) کے طور پر 1200 بھرتیاں ہونگی جن میں 750 میوزک ٹیچر اور 750 آرٹ ٹیچر بھرتی کیئے جائیں گے۔

وزیر تعلیم کا کہنا ہے کہ آؤٹ آف اسکول بچوں کی تعداد مستند نہیں ہے ‛ ہمارے صوبے میں بچوں کی اتنی بڑی تعداد ہی نہیں جتنی تعداد این جی اوز اسکول سے باہر بچوں کی بتاتے ہیں ۔ ایک کروڑ 20-30 لاکھ کل بچے ہیں جن میں سے 40-45 لاکھ لاکھ بچے زیر تعلیم ہیں اور اس کے علاوہ سیف اسکولز ‛ مدرسوں اور دیگر اسکولنگ سسٹم میں ہیں۔

اسکولوں میں فرنیچر مہیا کرنے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ 9 لاکھ بچوں کی سہولت کے لئے 291845 ڈیکس کی خریداری کی ہے۔

اسکول اپ گریڈیشن پروجیکٹ کے تحت 600 سکولوں کی اپ گریڈیشن کی گئی ہے اور ADP کے تحت 305 سکولوں کی اپ گریڈیشن ‛ ASPIRE کے تحت 20 سکول اور SSIEP کے تحت 160 سکولوں کو اپ گریڈ کیا جائے گا ۔مجموعی طور پر ایک ہزار 85 سکولوں کو اپ گریڈ کیا جائے گا۔

وزیر تعلیم کے مطابق پہلی مرتبہ سائنس میوزیم پانچ یونٹس کی نئی تعمیر کی جائے گی جن میں سکھر، بینظیر آباد، لاڑکانہ، حیدر آباد، میرپور خاص کے سکول شامل ہیں ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *