ماؤنٹ ایوریسٹ سر کرنے کا جھوٹا دعویٰ کر نیوالے بھارتی کوہ پیما نے سچ میں چوٹی سر کرلی

ماؤنٹ ایوریسٹ

2016 میں دنیا کی سب سے بلند چوٹی ماؤنٹ ایوریسٹ سر کرنے کا دعویٰ کرنے والے بھاتی کوہ پیما نریندر سنگھ یادیو نے اب سچ میں چوٹی سرلی۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق 2016 میں نریندر سنگھ نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے ماؤنٹ ایوریسٹ سر کرلی ہے تاہم ان کا یہ دعویٰ بعد میں اس وقت غلط ہوا جب ان کی چوٹی کو سر کرنے کی تصاویر میں ڈیجیٹل طور پر تبدیلیاں کی گئیں۔

تاہم بعد ازاں 2020 میں بھارتی کوہ پیماہ پر نیپال کی حکومت کی جانب سے 2016 کی تاریخ سے 6 سال کی پابندی عائد کی گئی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق نریندر سنگھ کی پابندی 20 مئی کو ختم ہوئی جس کے 7 دن بعد انہوں نے اب حقیقت میں ماؤنٹ ایوریسٹ سرکرلی اور اس بار اپنے کارنامے کو ثابت کرنے کے لیے ان کے پاس تصاویر اور ویڈیوز کا کافی ذخیرہ موجود تھا۔

اطلاعات کے مطابق نیپال کے محکمہ سیاحت کی اہلکار نے کہا کہ ہم نے بدھ کے روز بھارتی کوہ پیما نریندر سنگھ کو ثبوت پیش کرنے کے بعد ماؤنٹ ایوریسٹ سر کرنے کا تصدیقی سرٹیفکیٹ دےدیا۔

چوٹی سر کرنے کے بعد نریندر سنگھ نے فرانسیسی خبررساں ایجنسی اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ‘ایورسٹ سب کے لیے ایک خواب ہے لیکن میرے لیے یہ زندگی ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ مجھ پر بہت سارے الزامات تھے اسی لیے مجھے خود کو ثابت کرنے کیلئے ایوریسٹ کو سرکرنا پڑا۔

نریندر سنگھ کا کہنا تھا کہ میں پہلے بھی چوٹی تک پہنچ گیا تھا لیکن 2020 میں مہم کے لیڈر نے دیکھا کہ میں بھارت کے معزز Tenzing Norgay Adventure Award کے لیے نامزد ہوگیا تو انہوں نے میری تصاویر میں تبدیلیاں کیں اور انہیں سوشل میڈیا پر پوسٹ کردیا۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *