معروف گلوکارہ شکیرا بڑی مشکل میں پھنس گئیں

معروف گلوکارہ

اسپین کی ایک عدالت نے ٹیکس فراڈ کے مقدمے میں کولمبین گلوکارہ شکیرا کی اپیل مسترد کر دی ہے۔

دورانِ سماعت ایک جج نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ پاپ اسٹار نے ریاست کے لیے اپنی مالی ذمہ داریوں سے بچنے کے لیے کئی اقدامات کئے جس کے کافی ثبوت موجود ہیں۔

یہ کیس دسمبر 2018 میں پہلی بار سرخیوں میں آیا تھا جب ہسپانوی پراسیکیوٹرز نے گلوکار پر 2012 اور 2014 کے درمیان کمائی گئی آمدنی پر 14.5 ملین یورو (15.5 ملین ڈالرز) ٹیکس کی عدم ادائیگی کا الزام لگایا۔

45 سالہ شکیرا نے جون 2019 میں گواہی دیتے ہوئے کسی بھی غلط کام سے انکار کیا۔

استغاثہ کا الزام ہے کہ شکیرا بہاماس میں اپنی رہائش گاہ ہونے کے باوجود زیادہ تر اسپین میں رہتی تھیں۔

جمعرات کو جاری کیے گئے اپنے فیصلے میں، ہسپانوی عدالت کا کہنا تھا کہ شواہد سے پتہ چلتا ہے شکیرا “اسپین کی ایک عادی رہائشی تھیں”۔

عدالت نے مزید کہا کہ دستاویزات کسی دوسرے ملک میں ٹیکس کے مقاصد کے لیے ان کی رہائش کو ثابت کرنے میں ناکام رہے۔

عدالت نے جولائی کے اس فیصلے کو برقرار رکھا جس میں ہسپانوی جج مارکو جوبیریاس نے لکھا تھا کہ ان کی تین سالہ تحقیقات میں پایا گیا کہ مقدمہ چلانے کے لیے “جرائم کے کافی ثبوت” موجود ہیں۔

شکیرا کی تعلقات عامہ کی فرم نے جمعرات کو کہا کہ اسپین کے ٹیکس آفس کی طرف سے قرض کے بارے میں مطلع ہونے کے بعد اس نے فوری طور پر اپنی واجب الادا رقم ادا کر دی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *