روس کا ماریوپول میں اسٹیل پلانٹ پر مکمل کنٹرول کا دعویٰ

روس کا ماریوپول میں اسٹیل پلانٹ پر مکمل کنٹرول کا دعویٰ

کیف: وس نے یوکرین کے بندرگاہی شہر ماریوپول میں واقع آزوفسٹل اسٹیل پلانٹ کا مکمل کنٹرول حاصل کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ روسی وزارت دفاع کے مطابق صدر ولادیمیر پوٹن کو اِس مشن کے خاتمے کے حوالے سے آگاہ کردیا گیا ہے۔

اسٹیل پلانٹ میں موجود یوکرین کے آخری جنگجوؤں نے گزشتہ روز کہا کہ انہیں کیف سے ماریوپول کا دفاع روکنے کے احکامات موصول ہوئے ہیں۔ یوکرینی صدر وولودیمیر زیلنسکی کے مطابق ان جنگجوؤں کو اسٹیل پلانٹ سے باہر نکلنے اور اپنی جان بچانے کا واضح اشارہ دیا گیا تھا۔

یوکرین کے دیگر علاقوں میں لڑائی جاری ہے۔ بتایا گیا ہے کہ خارکیف کے جنوب میں واقع لوذووا شہر کے ایک ثقافتی مرکز پر کیے گئے روسی حملے میں کم از کم آٹھ افراد زخمی ہوگئے۔

دوسری جانب روس نے فن لینڈ کیلئے گیس کی سپلائی روک دی ہے۔ فن لینڈ میں توانائی کی سرکاری کمپنی گاسُم کے مطابق روس کی طرف سے قدرتی گیس کی فراہمی معطل کردی گئی ہے۔

اس کمپنی کے جاری کردہ بیان کے مطابق گیس کی سپلائی اب بالٹک کنیکٹر پائپ لائن کے ذریعے یقینی بنائی جارہی ہے، جو فن لینڈ اور ایسٹونیا کو ملاتی ہے۔ روس کی جانب سے گاسُم سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ وہ گیس کے بل روسی کرنسی روبل میں ادا کرے، تاہم انہوں نے ایسا کرنے سے انکار کردیا۔

فن لینڈ پہلے ہی نیٹو اتحاد میں شمولیت کی باضابطہ درخواست دے چکا ہے، جس کے چند روز بعد گیس کی ترسیل روک دی گئی تھی۔ فن لینڈ نے یہ فیصلہ یوکرین پر روسی حملوں کے بعد سکیورٹی خدشات کے نتیجے میں کیا ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *