پرویز خٹک کی ہفوات شرمناک ہیں ، معافی مانگے، قاری محمد عثمان

کراچی (پ ر) جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما، امیر ضلع کیماڑی کراچی قاری محمد عثمان نے پرویز خٹک کی علمائے کرام کے بارے میں ہرزہ سرائی پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پرویز خٹک کی ہفوات شرمناک ہیں۔ ایسی زبانیں گدی سے نکال دیں گے جو علماء کو دھمکیاں دیں۔ کسی مائی کے لعل میں ہمت ہے تو صرف ایسا سوچ کر دکھائے، حکومت کی طرح گھروں سے باہر پٹخ دیں گے۔

پرویز خٹک اپنی بکواس پر معافی مانگے ورنہ سر چھپانے کی جگہ نہیں ملے گی۔ پوری لیڈر شپ مغرب زدہ ہے۔ عمرانی ٹولہ اب ایک فتنے کی شکل اختیار کرچکا ہے اورفتنے کو کچلنا ضروری ہوتا ہے۔ قاری محمد عثمان نے کہا کہ پہلے دن سے کہ رہے ہیں کہ یہ دین اور مذہب بیزار طبقہ ہے۔ پرویز خٹک اپنی صحت اور اوقات دیکھ کر بولا کریں۔

مزید پڑھیں: *نفاذ قومی زبان : ہم کیا کریں؟ *

انہوں نے کہا کہ عمران خان دماغی توازن کھو چکے ہیں۔ وہ اگر یہ طے کرچکے تھے اب قیامت تک وہی پاکستان کے وزیر اعظم رہیں گے تو یہ تاریخ کی سب سے بڑی حماقت ہے،اور کوئی نارمل انسان ایسی سوچ کاحا مل نہیں ہوسکتا۔ قاری محمد عثمان نے کہا کہ اگر پرویز خٹک نے عمران خان کے حکم پر مساجد کے ائمہ کرام کو مساجد سے باہر نکال پھینکناطے کرہی لیا ہے تو پھر دیر کس بات کی ہے؟ آئیں میدان میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو جائے گا۔

پرویز خٹک کی طرح کے ڈھانچے علمائے کرام کی ایک پھونک کی مار ثابت ہوں گے ان شاء اللہ۔ قاری محمد عثمان نے کہا کہ عمرانی ٹولہ کسی غلط فہمی کا شکار نہ ہو، عمران خان قوم میں خانہ جنگی اور نفرت کا جو بیج بو رہے ہیں بالآخر انہی کے گلے کا پھندا ہوگا۔ ہم سیاسی اور نظریاتی لوگ ہیں، اسی میدان میں شکست دیں گے۔ اگر عمرانی ٹولے نے تشدد کا راستہ اختیار کر ہی لیا ہے تو پھر اپنا دفاع کرنا اور یوتھیوں کا علاج جانتے ہیں۔

مزید پڑھیں: عامر لیاقت کی تیسری اہلیہ بھی طلاق کیلئے عدالت پہنچ گئی

قاری محمد عثمان نے کہا کہ پاکستانی قوم باشعور اور دوراندیش قوم ہے۔ وہ سیاسی اختلافات کو سیاسی میدان میں دیکھنااور حل کرنا چاہتی ہے۔ سیاسی معاملات کو ذاتیات پر لاکھڑا کرنا عمران خان کی ایجاد ہے۔ یہ تیاری وہ یورپ، مغرب،اور یہودی معاشرے میں کرکے آئے ہیں۔قاری محمد عثمان نے کہا کہ عمران خان جو کھیل کھیل رہے ہیں اسکی منصوبہ بندی جس معاشرے میں ہوئی ہے عمران خان اسی معاشرے کی پیداوار ہیں۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *