بجلی و پیٹرول بحران، سری لنکا کے بعد کہیں ہم دیوالیہ نہ ہوجائیں: امان اللہ خان

بجلی و پیٹرول بحران، سری لنکا کے بعد کہیں ہم دیوالیہ نہ ہوجائیں: امان اللہ خان

کراچی (پ ر) پاکستان مسلم الائنس کے چیئرمین امان اللہ خان پراچہ نے کہا کہ پاکستان اس وقت سنگین بحران کی طرف بڑھ رہا ہے جو اس بات کا الارم ہے کہ کہیں پاکستان بھی پڑوسی ملک سری لنکا کی طرح دیوالہہ نہ ہوجائے۔ اس سے بچنے کے لئے بروقت ٹھوس اور ہنگامی اقدا مات کرنا ضروری ہیں ورنہ پانی سر سے اونچا ہوجائے گا۔

حالیہ سیاسی خانہ جنگی، پٹرول وڈیزل کی مصنوعی قلت، آئی ایم ایف سے ایک بار پھر سخت شرائط پر قرضے، تجارتی خسارہ، ناقص ٹریڈ پالیسیز، ملک کے سفید ہاتھی ادارے و انڈسٹریز، بجلی کا شارٹ فال، پانی کی قلت اور بے روزگاری ایک طرف غریب عوام پر قہر بن کر نازل ہو رہا ہے۔

دوسری جانب ملکی معیشت کا پہیہ رُک گیا ہے۔ اس وقت ملک بھر کے دیہی علاقوں میں 16-18 گھنٹے، جبکہ شہری علاقوں میں 10-12 گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ اور لوڈ مینجمنٹ کے نام پر بجلی غائب ہے۔ پورے ملک میں بجلی کا شارٹ فال بڑا بحران بن چکا ہے۔ بجلی کا شارٹ فال ساڑھے آٹھ ہزار میگا واٹ تک پہنچ گیا ہے۔

ملک میں بجلی کی طلب 27 ہزار 200 میگا واٹ جبکہ پیداوار صرف 18 ہزار 700 میگاواٹ ہے۔ سرکاری تھرمل پلانٹس سے 900 میگاواٹ بجلی پیدا ہو رہی ہے جبکہ ملک کے بڑے ڈیمز میں پانی کا ذخیرہ نا کافی ہے۔

تربیلا ڈیم خالی اور منگلا میں بھی پانی کا ذخیرہ نہ ہونے کے برابر ہے، جس سے صاف ظاہر ہے کہ آئندہ چند روز میں توانائی کا بحران مزید سنگین ہونے کا خدشہ ہے۔ سیاستدان اگر سابقہ حکومتوں پر الزام تراشی کرنے کے بجائے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کریں تو ملک بروقت معاشی بدحالی سے نکل سکتا ہے۔

امان اللہ خان پراچہ نے افطار کنونشن میں اپنے ورکرز اور عہدیداران سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئی ایم ایف سے مزید قرضوں کی صورت میں ملک پر مزید سخت پابندیاں اور شرائط لاگو ہوں گی جس کا اثر غریب اور متوسط طبقہ کے عوام پر براہ راست پڑے گا۔

ملک پر مزید قرضوں کا بوجھ بڑھے گا اور قرضے اُتارنے کیلئے مزید قرضے لئے جائیں گے۔ جہاں پہلے ہی آنے والی نسل کا ہر بچہ تقریباً 2 لاکھ روپیہ کا مقروض ہے ۔سری لنکا کے دیوالیہ ہونے کی بھی سب سے بڑی وجہ قرضے اور پرتعیش اشیاء کی درآمدات تھیں۔

بڑھتی ہوئی پٹرول پرائسز، بجلی شارٹ فال، بلوں میں ااضافہ اور دن بدن بڑھتی مہنگائی عوام کی کمر توڑ دے گی جبکہ جھوٹے وعدوں سے نالاں یہ قوم اب کسی مسیحا کی منتظر ہے جو ان کے غموں کا مداوا کرے اور انہیں ان کے حقیقی حقوق دے اور یہ اس وقت ہی ممکن ہے جب غریب اور متوسط طبقے کے لوگ اسمبلیوں میں نمائندگی کریں۔

پاکستان مسلم الائنس ان ہی لوگوں کی جماعت ہے اور اس کا منشور ہے کہ غریب اور متوسط طبقہ کو برابری کے حقوق دئےے جائیں اور ان کو نمائندگی دی جائے تا کہ ملکی مسا ئل بہتر ین طریقے سے حل کئے جا سکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ایم اے کا منشور پاکستان میں موجود کرپٹ اور نا اہل نظام کا مکمل خاتمہ ہے جو ہم کرکے دکھائیں گے ۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *