اقوام متحدہ کے وفد کی جولین ہارنیس کی سربراہی میں صوبائی وزیر آبپاشی جام خان شورو سے ملاقات

کراچی() : صوبائی وزیر برائے محکمہ آبپاشی جام خان شورو سے اقوام متحدہ کے ریذیڈنٹ اینڈ ہیومینٹیرین کوآرڈینیٹر جولین ہارنیس کی قیادت میں تین رکنی وفد نے انکے دفتر میں ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران دریائے سندھ میں پانی کی صورتحال، پانی بحران اور زراعت کے شعبے پر پڑنے والے اثرات، موسمیاتی تبدیلی، پینے کے صاف پانی کی دستیابی اور دیگر متعلقہ امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

اجلاس میں قدرتی وسائل کی کمی اور انکے تحفظ کی اہمیت کو مدنظر رکھتے ہوئے درپیش موجودہ مسائل پر بھی بات چیت کی گئی۔صوبائی وزیر آبپاشی جام خان شورو نے اقوام متحدہ کے وفد کو صوبہ سندھ کے آبپاشی کے نظام، مختلف آبی مسائل، انڈس ڈیلٹا، اور دیگر مسائل کے بارے میں بریفنگ کیا صوبائی وزیر آبپاشی نے وفد کو بتایا کہ صوبہ سندھ کو شدید پانی بحران کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور ڈائون اسٹریم کوٹری کے مقام پر انڈس ڈیلٹا میں پانی نہ چھوڑے جانے کی وجہ سے صوبہ سندھ مختلف ماحولیاتی تبدیلی کے مسائل درپیش ہیں اور کوٹری ڈائون اسٹریم کے نیچے مطلوبہ مقدار کا پانی نہ چھوڑنے کی وجہ سے انڈس ڈیلٹا تباہ ہو رہا ہے جس کے باعث زراعت کاشعبہ شدید متاثر ہو رہا ہے۔

مزید پڑھیں: مسجد الاقصی، فلسطینی نمازیوں پر اسرائیلی پولیس کا حملہ، 152 افراد زخمی

جام خان شورو نے کہا کہ دریائے سندھ صوبے کی معاشی لائف لائن ہے اور ماحولیاتی تبدیلی کی وجہ سے دنیا کا یہ ساتواں بڑا ڈیلٹا تیزی سے زیر سمندر آرہا ہے اور تقریباً 22 لاکھ ایکٹر سے زائد اراضی سمندر نگل چکا ہے۔

اس موقع پر، اقوام متحدہ کے ریذیڈنٹ اور انسانی ہمدردی کے کوآرڈینیٹر، جولین ہارنیس نے کہا کہ ہم دنیا بھر میں دریائوں کے انتظام اور ماحول کی بہتری میں مختلف ممالک کو مدد فراہم کرتے ہیں۔ انہوں نے انڈس ریور بیسن کے بہتر انتظام، پانی کی رسائی میں بہتری اور اسکے استعمال اور معاشی ترقی کیلئے اپنے مکمل تعاون کی یقین دھانی کروائی۔

انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے فریم ورک 27-2023 کے تحت، ہم پائیدار ترقی کے اہداف کے نفاذ میں حکومت کی معاونت پر توجہ دے رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ وہ اپنی اقوام متحدہ کی ٹیم کے ہمراہ صوبہ سندھ کے شہروں سکھر، حیدرآباد، ٹھٹھہ، بدین اور دیگر مختلف علاقوں کا دورہ بھی کرکے صوبے کے لوگوں کی معاشی، ثقافتی صورتحال کا جائزہ لیں گے اور صوبے میں جاری اقوام متحدہ کے ترقیاتی منصوبوں کا معائنہ بھی کریں گے۔

مزید پڑھیں: پاک افغان بارڈر پر دہشت گردوں کا فوجی قافلے پر حملہ، 7 فوجی شہید

انہوں نے مزید بتایا کہ وہ سکھر بیراج اور حیدرآباد، ٹھٹھہ اور بدین کی تاریخی مقامات کا دورہ کریں گے تاکہ صوبہ سندھ کے مختلف ثقافتی اور روایتی پہلوؤں کو بخوبی جانا جائے۔ اس موقع پر سندھ کے محکمہ آبپاشی کے وزیر جام خان شورو نے جولین ہارنیس اور انکے وفد کے ڈاکٹر آفتاب بھٹی اور عمران لغاری کو سندھی ٹوپی اور اجرک کے تحائف بھی پیش کیے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *