پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 51 روپے فی لیٹر اضافے کی بازگشت

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 51 روپے فی لیٹر اضافے کی بازگشت

اسلام آباد: پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 51 روپے فی لیٹر تک اضافے کی خبریں گردش ہیں۔ واضح رہے کہ اوگرا کی جانب سے حکومت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بڑے اضافے کی تجویز دی گئی ہے، جس کی وجہ سے نئی حکومتوں کی مشکلات اور امتحانات میں اضافہ ہوگیا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اوگرا نے پیٹرول کی قیمت میں ساڑھے 21 روپے اور ڈیزل کی قیمت میں 51 روپے 30 پیسے اضافے کی تجویز حکومت کو بھجوا دی ہے۔ اوگرا کی جانب سے بھیجی گئی تجویز میں کہا گیا ہے کہ اگر فل لیوی اور ٹیکس لگایا جائے تو پیٹرول کی قیمت میں ساڑھے 83 روپے اور ڈیزل کی قیمت میں 119 روپے فی لیٹر اضافہ کرنا ہو گا۔

مکمل درآمدی لاگت، شرح تبادلہ کے نقصان اور زیادہ سے زیادہ ٹیکس وصول کرنے کے لیے اس اضافے کا اطلاق 16 اپریل سے ہوگا۔ اوگرا اور پیٹرولیم ڈویژن کے اعلیٰ ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ ریگولیٹر نے آئندہ 15 روز کے لیے جمعہ (آج) لیے جانے والے جائزے کے لیے قیمتوں میں اضافے کے لیے حکومت کو دو آپشنز پیش کیے ہیں اور دونوں ہی صورتوں میں قیمت اب تک کی سب سے زیادہ ہے۔

اگر یہ اضافہ کیا گیا تو پیٹرول کی ایکس ڈپو قیمت 21.60 روپے (14.2 فیصد) اضافے سے 149.86 روپے سے بڑھ کر 171.46 روپے فی لیٹر ہو جائے گی۔ یہی فارمولا مٹی کے تیل کی قیمت 161.61 روپے فی لیٹر تجویز کرتا ہے جو اس وقت کے 125.56 روپے کے مقابلے میں 36.03 روپے یا 28.7 فیصد زیادہ ہے۔

اسی طرح لائٹ ڈیزل آئل (ایل ڈی او) کی ایکس ڈپو قیمت اس وقت 118.31 روپے کے مقابلے میں 157.20 روپے فی لیٹر شمار کی گئی ہے جو کہ 38.89 روپے یا 32.9 فیصد کا اضافہ ظاہر کرتی ہے۔

Comments: 0

Your email address will not be published. Required fields are marked with *